شرجیل میمن کیخلاف بد عنوانی کانیا ریفرنس دائر کرنے کی منظوری

اسلام آباد(سٹیٹ ویوز) چیئرمین نیب جسٹس(ر)جاویداقبال نے پیپلزپارٹی کے رہنما شرجیل میمن کے خلاف بد عنوانی کا ریفرنس دائر کرنے کی منظوری دے دی، شرجیل میمن پر اختیارات کے ناجائز استعمال اور آمدن سے زائد اثاثے بنانے کا الزام ہے۔تفصیلات کے مطابق چیئرمین نیب جسٹس(ر)جاویداقبال کی زیرصدارت ایگزیکٹیوبورڈ کا اجلاس ہوا ، جس میں بدعنوانی کے3 ریفرنسزدائرکرنے اور 12انکوائریوں کی منظوری دی گئی۔

اجلاس میں پیپلز پارٹی کے رہنما شرجیل میمن و دیگر کے خلاف بد عنوانی کا ریفرنس دائر کرنے کی منظوری دے دی گئی ، ملزمان میں سابق منیجنگ ڈائریکٹرپی ایس اوعرفان خلیل قریشی شامل ہیں ، ملزمان پراختیارات کےناجائزاستعمال ،آمدن سےزائداثاثےبنانےکاالزام ہے۔

نیب کا کہنا ہے کہ عرفان خلیل پرمختلف پٹرولیم کمپنیوں کوآئل کی سپلائی کا الزام ہے جبکہ عبد الحمید اور دیگر کے خلاف بھی بد عنوانی کاریفرنس دائرکرنے کی منظوری دی ، ملزمان پر غیر قانونی طور پر تعمیرات کے ٹھیکے دینے کا الزام ہے۔

نیب کےایگزیکٹیوبورڈاجلاس میں 12 انکوائریوں کی منظوری دی گئی ، جن میں بابرغوری،سینیٹرکلثوم پرویز،اویس شاہ ،فوادحسن فواد،غلام نظامانی ، سعیدخان نظامانی،قیصرعباس مگسی و دیگر شامل ہیں۔چیئرمین نیب نے کہا بدعنوانی ایک ناسورہےجوملکی ترقی میں بڑی رکاوٹ ہے، بدعنوان عناصرسےلوٹی گئی رقم برآمدکرنےکیلئےکوشاں ہیں، 22 ماہ میں لوٹی گئی71 ارب کی رقم قومی خزانے میں جمع کرائی۔

یاد رہے رواں سال جولائی میں چیئرمین نیب نے پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما، شرجیل میمن کے خلاف تفتیش کی منظوری دی تھی، نیب کا کہنا تھا کہ سابق وزیر نے بدعنوانی کے ذریعے کئی بے نامی جائیدادیں بنائیں، بے نامی جائیدادیں خاندان، ملازمین کے نام پربنائیں گئیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں