دس محرم الحرام، جلوس، سکیورٹی کے سخت انتظامات،موبائل سروس بند، شام غریباں آج ہوگی

اسلام آباد(سٹیٹ ویوز) 10محرم الحرام کے مرکزی جلوس اسلام آباد، کراچی، لاہور، پشاور، کوئٹہ، راولپنڈی اور ملتان سمیت دیگر شہروں سے برآمد ہورہے ہیں۔ اس ضمن میں سیکیورٹی کے خصوصی انتظامات کیے گئے ہیں اور اس بات کو یقینی بنایا گیا ہے کہ جلوس و مجالس عزا کے دوران کسی بھی قسم کا کوئی ناخوشگوار واقعہ رونما نہ ہو۔

مجالس کے اطراف اور جلوس کی گزرگاہوں پہ اسکاؤٹس بچے اپنی ذمہ داریاں انجام دے رہے ہیں اور شرکائے جلوس کو مخصوص راستوں سے گزرنے میں رہنمائی بھی مہیا کررہے ہیں۔حضرت محمد مصطفیٰ ﷺ کے نواسے حضرت امام حسین ؓ اور ان کے ساتھیوں کی کربلا کے میدان میں دی جانے والی لازوال قربانیوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے شہدائے کربلا کی سیرت و کردار پر علمائے کرام، ذاکرین، مشائخ عظام اور مفتیان کرام روشنی ڈال رہے ہیں۔ شہروں میں آج کی مناسبت سے جگہ جگہ سبیلیں لگائی گئی ہیں جہاں ٹھنڈے مشروبات و ٹھنڈے پانی کی فراہمی یقینی بنائی جارہی ہے۔ عزاداران کے لیے نذر نیاز کا سلسلہ بھی جاری ہے۔

10 محرم الحرام کے ماتمی جلوسوں کے حوالے سے متبادل روٹ پلا ن جاری۔شہر قائد میں مجالس کے اختتام پر شبیہ ذوالجناح، علم اور تازیوں کے جلوس برآمد ہوں گے۔ برآمد ہونے والے جلوس نمائش چورنگی سے پیپلز چورنگی اور صدر سے براستہ ایم اے جناح روڈ، ریڈیو پاکستان و کھارادر سے ہوتے ہوئے امام بارگاہ حسینیہ ایرانیاں پر اختتام پذیر ہوں گے۔ شرکائے جلوس نماز ظہرین قائد اعظم کے مزار کے وی آئی پی گیٹ کے سامنے ادا کریں گے۔

شرکائے جلوس کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے تمام راستے کنٹینرز اور قناتیں لگا کر بند کردیے گئے ہیں۔ شہر میں سات ہزار سے زائد رینجرز و پولیس اہلکاروں کو تعینات کیا گیا ہے۔ حفاظتی نکتہ نگاہ سے جلوس کی فضائی نگرانی کی جارہی ہے جب کہ بم ڈسپوزل اسکواڈ تمام گزرگاہوں سمیت دیگر مقامات پراپنی ذمہ داریاں سرانجام دے گا۔

صوبائی حکومت اور شہری انتظامیہ کے احکامات پر جلوس کی گزرگاہ کے اطراف واقع بلند و بالا عمارات پہ رینجرزو پولیس کے جوان تعینات ہیں۔ شہر میں موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پہ پابندی عائد ہے جب کہ موبائل فون سروسز بھی عارضی طور پر معطل کی گئی ہیں۔

10 محرم الحرام کے ماتمی جلوسوں کے حوالے سے متبادل روٹ پلا ن جاری۔راولپنڈی میں جلوس و مجالس جاری ہیں۔ شہر کی امام بارگاہ یادگار حسین کمرشل مارکیٹ سے علم کا جلوس برآمد ہوگا جو مقررہ راستوں سے ہوتا ہوا واپس امام بارگاہ یادگار حسین پہ اختتام پذیر ہو گا ۔

لاہور میں جلوس و مجالس کی سیکیورٹی یقینی بنانے کے لیے 15 ہزار سے زائد افسران و اہلکار اپنے فرائض سرانجام دیں گے۔ شہر کا مرکزی جلوس پانڈواسٹریٹ اسلام پورہ سے برآمد ہوگا جو روایتی راستوں سے ہوتا ہوا خیمہ سادات امام بارگاہ پر اختتام پزیرہوگا۔

پشاور میں شبیہہ زوالجناح کا جلوس امام بارگاہ حسینیہ ہال سے برآمد ہو کر براستہ صدرروڈ، فخرعالم روڈ، کالی باڑی اور فوارہ چوک سے ہوتا ہوا امام بارگاہ حسینیہ ہال پراختتام پذیر ہوگا۔ملک کے دیگر شہروں کی طرح کوئٹہ میں بھی موبائل فون سروسز صبح چھ بجے سے شب 12 بجے تک بند رہیں گی جب کہ موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پہ پابندی عائد ہے۔

ملتان میں10 محرم الحرام کا مرکزی جلوس امام بارگاہ ممتاز آباد سے برآمد ہو گا اور اپنے مقررہ راستوں سے ہوتا ہوا اپنے طے شدہ مقام پہ اختتام پذیر ہوگا۔ محکمہ داخلہ سندھ نے کراچی، حیدرآباد، سکھر، نواب شاہ، میرپورخاص اور لاڑکانہ ڈویژنوں میں موبائل فون سروسز بند کرنے اور انہیں بحال کرانے کا اختیار کمشنرز اور ڈی آئی جیز کو تفویض کردیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں