ہواوے پر امریکی پابندیوں کے بعد روس نے اپنی سرزمین پیش کردی

ماسکو (نیوزڈیسک) امریکہ کی جانب سے چینی ٹیلی کمیونیکیشن کمپنی ہواوے پر جاسوسی الزامات کے باعث پابندیوں کے نفاذ کے بعد روس نے اس کے لیے اپنی سرزمین پیش کردی جس کا مقصد ملک میں 5 جی ٹیکنالوجی نیٹ ورک کا قیام اور فروغ ہے۔

ذرائع ابلاغ کے مطابق امریکہ کی جانب سے چینی ٹیلی کام کمپنی پر پابندیوں کے نفاذ کا روس نے بھرپور فائدہ اٹھانا شروع کردیا ہے، رواں ماہ ہواوے نے روس کے دارالحکومت ماسکو میں ٹیکنالوجی کمپنی ایم ٹی ایس کی شراکت سے پہلے فائیو جی ٹیسٹ ژون کا آغاز کیا جس کا مقصد دارالحکومت کے نواحی علاقوں کو اس سروس کی فراہمی اور چین کے ساتھ یکجہتی کا اظہار ہے۔

ماسکو حکام کا کہنا ہے کہ یہ نیٹ ورک آئندہ چند سال کے دوران شہر کے عمومی ڈھانچے کا حصہ بن جائے گا۔روس کا ارادہ ہے کہ 2024 ء تک اس کے تمام بڑے شہروں میں فائیوجی ٹیکنالوجی فراہم کردی جائے۔یاد رہے کہ چینی صدر شی جن پنگ جب رواں سال ماسکو کے دورے پر گئے تو روسی کمپنی ایم ٹی ایس نے ہواوے کے ساتھ ٹیکنالوجی ٹرانسفر کے معاہدے پر دستخط کیے تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں