امریکہ اورکینیڈا میں مقیم کشمیریوں نے مسئلہ کشمیر اجاگرکرنے کیلئے نئی حکمت عملی وضع کرلی

اسلام آباد(سٹیٹ ویوز)امریکہ اور کینیڈا میں مقیم کشمیری کمیونٹی نے مسئلہ کشمیر کو بین الاقوامی سطح پر موثر طریقے سے اٹھانے اور بین الاقوامی حمایت حاصل کرنے کے لئے نئی حکمتِ عملی وضع کر لی ہے۔ جس کے تحت خود مختاری اور کشمیر بنے گا پاکستان جیسے نعروں کو پسِ پشت ڈال کر ریفرنڈم کے ایک نقطہ پر متحد ہونے کا اعلان کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق نیو یارک میں امریکہ کی مختلف ریاستوں کے علاوہ کنیڈا سے آئے ہوئے وفود نے کشمیر سالیڈیریٹی کونسل آف نارتھ امریکہ کے زیر اہتمام ایک اجلاس میں شرکت کی ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کشمیر سالیڈیریٹی کے چیئرمین جاوید راٹھور نے کہا کہ خود مختاری اور کشمیر بنے گا پاکستان کے نعروں نے کشمیریوں کو تقسیم کیا ہے۔ جس کی وجہ سے تحریک آزادی کو شدید نقصان پہنچا ہے اور کشمیریوں کا اتحاد بھی پارہ پارہ ہو گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ نعرے قبل از وقت ہیں اور ان سے کشمیر کی تحریک آزادی کو نہ تو کوئی فائدہ ہے اور نہ ہی کشمیر ی عوام کو ، البتہ چند لوگوں کی انا کی تسکین ہوتی ہے، جبکہ کچھ کو ذاتی سیاسی فائدہ ہوتا ہے۔

جاوید راٹھور نے اجلاس میں تجویز پیش کی کہ آج سے ان نعروں کو پسِ پشت ڈال دیا جائے اور صرف ایک نقطہ پر اتفاق کیا جائے اور وہ نقطہ ہے ریفرنڈم۔ اجلاس میں موجود کشمیری کمیونٹی کے تمام افراد نے متفقہ طور پر اس حکمت عملی کی حمایت کیاور فیصلہ کیا کہ پور ی دینا کے علاوہ کشمیر میں بھی سب لوگوں کو ریفرنڈم کے نقطہ پر اکٹھا کیا جائے گا۔

اجلاس میں ایک قرادر کے ذریعہ حکومت پاکستان سے بھی مطالبہ کیا گیا کہ وہ مسئلہ کشمیر کو دنیا کے سامنے بنیادی انسانی حقوق اور حق خود ارادیت کا مسئلہ بنا کر پیش کیا جائے ، نہ کہ پاکستان اور ہندوستان کے درمیان کوئی سرحدی مسئلہ کے طور پر پیش کیا جائے۔

اجلاس میں ایک قرارداد کے ذریعہ حکومت پاکستان بالخصوص وزیراعظم پاکستان کی طرف سے کشمیر کے لئے کی گئی کوششوں کو سراہا گیا۔ اور انہیں یو این او میں مسئلہ کشمیر کو موثر طور پر اٹھانے پر خراج تحسین پیش کیا گیا۔ اجلاس میں کنیڈا سے سید ارشد حسین شاہ، طارق خان، راجہ قدیر ، سردار فاروق خان، سید تصدق حسین، امتیاز احمد، رضوان اسلم، ورجینیا سے سردار ذوالفقعار خان، شعیب ارشاد خان، جہانزیب شفیع، زاہد کیانی، میری لینڈ سے راجہ لیاقت کیانی، ایاز جرال، خورشید زمان عباسی، الطاف قادری، پنسلوینیا سے سردار زاہد خان، راجہ پرویز، خرم حمید، میسی چیوسٹ سے سید برہان بابر، ساجد زمان، ناز ناجی بٹ، عرفان الحسن چوہدری، ظہور الحق، جاوید خلیل خان، خواجہ سہیل اصغر، شکاگو سے یاسین چوہان، ڈاکٹر وسیم خواجہ، یونس میر، انڈیانہ سے راجہ آفتاب، معروف طاہر، ٹیکساس سے مجیب قاضی، راجہ مظفر مشی گن سے، ڈاکٹر اخلاق برلاس نیوجرسی سے امتیاز خان، سید آفتاب شاہ، خیام فاضل، رضوان خان، کوثر کاظمی، زوالفقعار کیانی، رفیق خواجہ نیویارک سے طلعت محمود، حشام علی نصرت،شکیل شیخ، عبدالرزاق خان، حسن رضا ڈار، سید تنویر شاہ، سلیم اعوان۔ کنٹکٹ سے حماد خواجہ کے علاوہ دیگر مرکزی رابطہ کونسل کے دیگر ممبران نے شرکت کی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں