Police Naka Paksitan

پولیس نے پولیس والوں کو گرفتار کر لیا

لاہور (ویب ڈیسک ) پولیس کی اگر بات کی جائے تو ایسے ایسے کارنامے منظر پر آ جاتے ہیں کہ بندہ حیران کے ساتھ پریشان بھی ہو جاتاہے۔کبھی بے گناہ کو جیل میں ڈال دیتے اور تشدد کر کے مار دیتے ہیں کبھی معصوم بچوں کو قتل کے کیس میں گرفتار کر لیتے ہیں توکبھی عمر رسیدہ شخص کو ریپ کے کیس میں گرفتار کر لیتے ہیں۔ان کی ایسی ویڈیوز بھی سامنے آتی رہی ہیں جب یہ آپس میں گتھم گتھا اور باہم دست و گریباں نظر آئے۔اس طرح کے کئی کارنامے پولیس والوں کی طرف سے ریکارڈ پر موجود ہیں-

تاہم اب ایک اور ریکارڈ بھی پولیس نے اپنے نام کر لیا ہے کہ پولیس نے پولیس والوں کو گرفتار کر لیا ہے۔یعنی کہ سندھ کی پولیس نے پنجاب پولیس کے اہلکاروں کو اس بات پر گرفتار کر لیا کہ ان کے علاقے میں جا کر آپریشن کیوں کیا۔پنوعاقل میں دہشت گردوں کے خلاف آپریشن کرنے والے پنجاب پولیس کے اہلکاروں کو سندھ سے تعلق رکھنے والے پیٹی بند بھائیوں نے حراست میں لے لیا۔سندھ پولیس ذرائع کے مطابق پنجاب پولیس کے کاؤنٹر ٹیررازم ڈپارٹمنٹ نے سندھ پولیس کو بغیر اطلاع دیئے پنو عاقل میں کارروائی کرتے ہوئے دو مبینہ دہشتگردوں کو ہلاک کیا۔

مبینہ پولیس مقابلے میں ہلاک ہونے والوں کا تعلق شیخوپورہ اور فیصل آباد سے ہے۔سندھ پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ ابتدائی تفتیش کے مطابق سی ٹی ڈی پنجاب کے اہلکار خفیہ اطلاع پر دہشتگردوں کو گرفتار کرنے پنوعاقل آئے تھے تاہم مقابلے کے دوران دو دہشتگرد مارے گئے۔سندھ پولیس کا کہنا ہے کہ ایس او پی فالو نہ کرنے پر پنجاب سی ٹی ڈی کے 6 اہلکاروں کو گرفتار کر کے تفتیش کی جا رہی ہے۔

ذرائع کا بتانا ہے کہ ہلاک دہشتگرد سعید کا تعلق کالعدم تنظیم سے تھا، ملزم جنوبی پنجاب میں کالعدم تنظیم کو دوبارہ منظم کرنے کی کوشش کر رہا تھا۔ریڈ بک کے مطابق ملزم پر پنجاب کے مختلف تھانوں میں 11 سنگین نوعیت کے مقدمات درج ہیں۔ملزم سعید لاہور میں ڈی ایس پی طارق کمبوہ کو شہید کرنے میں بھی ملوث تھا، اس کے علاوہ شیخو پورہ میں 13 افراد کو قتل کرنے میں بھی ملوث تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں