آزادکشمیرمیں پاکستان سٹیزن پورٹل کی شکایات بارے پراگریس رپورٹ سامنے آگئی

مظفرآباد(سٹیٹ ویوز)چیف سیکرٹری آزادحکومت ریاست جموں وکشمیر مطہر نیاز رانا کی زیر صدارت وزیر اعظم پاکستان کی جانب سے قائم کردہ پاکستان سٹیزن پورٹل میں آزادکشمیر کے حوالہ سے دائر کردہ شکایات کا جائزہ لینے کےلئے شکایات سیل کا اعلیٰ سطحی اجلاس بدھ کے روز منعقد ہوا۔اجلاس میں سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو فیاض علی عباسی ، ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنرل فرحت علی میر ، سیکرٹریز حکومت اور سربراہان محکمہ جات نے شرکت کی ۔

اس موقع پر سیکرٹری سروسز ڈاکٹر لیاقت حسین نے وزیر اعظم شکایات سیل آزادکشمیر کے حوالہ سے بریفنگ دی اور بتایا کہ ابھی تک آزاد کشمیر کے محکمہ جات کے حوالہ سے کل 3964 شکایات موصول ہوئیں جن میں سے 3364شکایات کا ازالہ کردیا گیا اس حوالہ سے آزاد کشمیر کی پراگرس 87فیصد ہے ۔میرپور میں زلزلہ کی وجہ سے شکایات کابروقت ازالہ کرنے میں دشواری کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے لیکن کوشش کریں Super escalatedشکایات کم ہو جائیں ۔

چیف سیکرٹری نے اس موقع پر کہا تمام محکمہ جات کی پراگرس بہت اچھی ہے تاہم اسے مزیدبہتر بنانے کے لیے اقدامات کیے جائیں چیف سیکرٹری آزاد کشمیر نے کہا کہ وزیر اعظم شکایات سیل کی جانب سے جاری کردہ ہدایات پر عملدرآمد کریں اور کوشش کریں کے اپنے محکمہ جات سے متعلق شکایات کا بروقت جواب دیں کیونکہ اس کا ریکارڈ ہر جگہ نمایاں ہو رہا ہے اور یہ عوام کا وزیر اعظم شکایات سیل پر اعتماد کا اظہار ہے۔

میرپور میں حالیہ زلزلہ میں تمام محکمہ جات نے اپنی استعداد سے بڑھ کر کام کیا ۔ محکمہ ٹیوٹا کی ٹیموں نے متاثرین کی مددمحکمہ صحت کی ٹیم نے شارٹ نوٹس پر جو کام کیا وہ اپنی مثال آپ ہے ۔ وزیر اعظم پاکستان عمران خان کومحکمہ جات کی کارکردگی کے حوالہ سے آگاہ کیا ہے ۔ انہوں نے سیکرٹری صاحبان کو کہا کہ آپ نے اچھا کام کیا ہے جس سے ریاست کی عزت بنی ہے بہتر ہے کہ ہم کسی مربوط پلاننگ اور ہدایات کو پر عملدرآمد کریں جو کام شروع کیا ہے اس کو مکمل کریں ۔

لوگوں کی امیدیں زیادہ ہیں اس حوالے سے ایک پالیسی وضع کرنے کی ضرورت ہے تاکہ لوگوں کی امیدوں پر پورا اترا جاسکے ۔ ہمارے کام کی وجہ سے ہماری حکومت کے ہاتھ مضبوط ہوں اور ہم یہ بھی دیکھیں اسے کیسے پورا کرنا ہے ۔ اسے وزیراعظم آزاد کشمیر نے بھی سراہا ہے کہ ہمارے ادارے کام کر رہے ہیں ۔ 2019کو ہم سیاحت کے طور پرمنا رہے ہیں لہذا اس حوالہ سے ایسے پروگرامات کا انعقاد کیا جائے جس سے سیاحت کو فروغ حاصل ہو ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں