غلطی سے اپنا ہی ہیلی کاپٹر مار گرانے والے بھارتی پائلٹ کو کیا سزا سنا دی گئ

لاہور (ویب ڈیسک) ہمارے ہمسایہ ملک بھارت کو بہت شوق ہے کہ وہ آئے روز کوئی نہ کوئی ہوائیاں چھوڑتا ہی رہتا ہے لیکن وہ یہ شوق فلموں میں ہی پورا کرپاتے ہیں کیونکہ حقیقت میں جب وہ لائن آف کنٹرول کراس کرتے ہیں تو ان کے پسینے چھوٹنے لگ جاتے ہیں۔ ہاتھ پاﺅں کانپنے کی ہی تو یہ نشانی ہے کہ رواں برس فروری کے مہینے میں دو طیارےپاکستان نے مار گرائے اوراپنا ایک طیارہ خود بھارتی فضائیہ نے ہڑبونگ کی حالت میں مار گرایا-

جس پر اب آفیسرز کا کورٹ مارشل کیا جا رہا ہے۔ بھارتی میڈیا کے مطابق وزارت دفاع کے ذرائع نے کہا ہے کہ رواں سال 27 فروری کو میزائل حملے میں اپنے ہی ہیلی کاپٹر کو نشانہ بنانے پر بھارتی فضائیہ کے ایک گروپ کیپٹن اور ایک ونگ کمانڈر کورٹ مارشل کا سامنا کریں گے۔ واقعہ میں ملوث دیگر 4 افسران کے خلاف بھی انضباطی کارروائی کی جائے گی۔ ان افسران میں دو ائیر کموڈور اور دو فلائٹ لیفٹیننٹ شامل ہیں۔

رواں سال 27 فروری کو مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فضائیہ کے افسران نے اپنے ہی روسی ساختہ ہیلی کاپٹر (MI-17)کو میزائل سے نشانہ بنا ڈالا تھا جس میں 6 بھارتی فوجی ہلاک ہو گئے تھے۔اس وقت بھارتی میڈیا کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فضائیہ کے اہلکاروں کو لے کر جانے والا ایم آئی 17 ہیلی کاپٹر ضلع بڈگام کے علاقے جیرنڈ کلاں میں تکنیکی خامیوں کے باعث گر کر تباہ ہوا ہے۔

بعد ازاں تحقیقات کے نتیجے میں یہ بات سامنے آئی کہ بھارتی فضائیہ نے پاک فضائیہ کے خوف میں اپنے ہی ہیلی کاپٹر کو میزائل مار کر تباہ کردیا۔ گزشتہ دنوں بھارتی فضائیہ کے سربراہ نے اپنے ہی ہیلی کاپٹر کو میزائل سے نشانہ بنانے کا اعتراف کرتے ہوئے بھارتی فضائیہ کی کارکردگی کا پول کھول دیا تھا۔

بھارتی ائیرچیف راکیش کمار نے 27 فروری کو پیش آنے والے واقعے سے متعلق اعتراف کرتے ہوئے بتایا کہ ایم آئی 17 ہیلی کاپٹر کو اپنے ہی میزائل سے نشانہ بنانا ایک بڑی غلطی تھی۔ بھارتی ائیرچیف نے کہا کہ ہیلی کاپٹر گرنے کی کورٹ آف انکوائری مکمل ہوچکی ہے، یہ ہماری ایک بڑی غلطی تھی کہ ہمارے ہی میزائل نے ہیلی کاپٹر کو نشانہ بنایا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں