جموں کشمیر سوشل جسٹس پارٹی نے بھارت کو بے نقاب کر دیا

اسلام آباد(نیوزڈیسک)چیئرمین جموں کشمیر سوشل جسٹس پارٹی نےکہا کہ ریاست جموں کشمیر جنت بےنطیر 72 سالوں سے گولہ بارود کی زد میں ہے۔ ایک بارپھر نیلم کے مقام پر انڈین بربریت کے باعت درجنوں دکانیں گھر گولہ باری کے باعث آگ کی نذر ہوئی ہیں ۔ درجنوں گھروں میں مقیم لوگ بے گھر ہوئے اور کئی لوگ زخمی ہونے اور جان کی بازی ہار گئے ۔ اگر آپ غور کریں کہ جب کسی سے گھر اور روزگار چھن جاتا ہے تو اس کی زندگی کتنی کٹھن ہو جاتی ہے۔ کشمیر کے بارڈر پر آئے دن ریاست کے معصوم شہری ہندوستان کی ہٹ دھرمی کا نشانہ بنتے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ بھارت کو عوام کی کوئی پرواہ نہیں بس انکو زمیں چاہیے ۔ اگر انکو عوام کی فکر ہو تو کشمیری عوام کو یہ حق دے کہ وہ کیا چاہتے ہیں ۔ اقوام متحدہ کی قراردادوں کی بھی پرواہ نہیں کی جاتی ۔جموں کشمیر سوشل جسٹس پارٹی بھارت کے رویہ کی مذمت کرتی ہے

انہوں ںے کہا کہ جنونی ایٹمی ملک بھارت عوام کے حال پر رحم کرے اور ریاست کے عوام کا حق خود ارادیت کو تسلیم کرے اور انھیں اپنی مرضی کا فیصلہ کرنے کا موقع دے.نیز ہمارا مطالبہ ہے کہ بے گھر یونے والے لوگوں کو گھر بنا کر دئیے جائیں، زخمیوں کو علاج معالجہ کی سہولت دی جائے اور متاثرین کو مالی معاوضہ ادا کیا جائے تاکہ انکی مشکلات میں کمی آ سکے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں