کیا نواز شریف کی حکومت سے ڈیل ہو گئی؟سینئر تجزیہ کار کا بڑا دعوی سامنے آ گیا

اسلام آباد (نیوزڈیسک) سابق وزیراعظم نواز شریف اس وقت سروسز اسپتال میں زیر علاج ہیں۔نواز شریف کی طبعیت میں کبھی بہتری آتی ہے تو کبھی پلیٹ لٹس کی تعداد مزید کم ہو جاتی ہے۔حکومت کا موقف ہے کہ نواز شریف کا بہترین علاج کیا جا رہا ہے جب کہ ن لیگ کا کہنا ہے کہ نواز شریف کا علاج مشکل مرحلے میں ہے ،حکومت نواز شریف کی صحت کےبارے میں مسلسل غفلت برت رہی ہے۔

اس تمام صورتحال میں نواز شریف کے بیرون ملک علاج کی خبریں بھی گردش کر رہی ہیں جسے کچھ سیاسی مبصرین ڈیل کا نام بھی دے رہے ہیں۔اسی حوالے سے سینئیر تجزیہ کار جان اچکزئی کا کہنا ہے کہ نواز شریف نے ڈیل کی 20 فیصد رقم ادا کر دی ہے۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نوازشریف کے لندن جانے کا پلان تیار ہے۔ چارٹرڈ سعودی طیاربھی پاکستان پہنچنے کے لیے تیار ہے۔

نواز شریف گروپ کی طرف سے ضمانتیں تحریری شکل میں فراہم کر دی گئی ہیں اور اس کی تصدیق بھی کر لی گئی ہے۔جان اچکزئی نے مزید کہا کہ نواز شریف نے ڈیل کی 20فیصد رقم پہلے ہی ادا کر دی ہے،دیگر رقم بھی آہستہ آہستہ ادا کر دی جائے گی۔جب کہ مریم نوا ز بھی جلد ہی باہر چلی جائیں گی۔ ۔جب کہ دوسری جانب رہنما پاکستان تحریکِ انصاف ڈاکٹر عامر لیاقت حسین نے بتایا ہے کہ اگلے دو دن کے اندر نواز شریف بیرونِ ملک جا سکتے ہیں۔

عامر لیاقت حسین نے نجی ٹی وی چینل سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اگر نواز شریف کے خون میں پلیٹ لیٹس بننا شروع نہ ہوئے تو اگلے دو دن میں انکے بیرونِ ملک جانے کا امکان ہے۔دوسری جانب مشیرِ اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے سابق وزیراعظم نواز شریف کی بیماری کے حوالے سے کہا ہے کہ نوازشریف کا مرغن غذاؤں کی وجہ سے کولیسٹرول بڑھا اور وہ بیمار ہوئے۔ انہوں نے کہا ہے کہ نواز شریف کے بیرون ملک جانے کا فیصلہ عمران خان نہیں ڈاکٹرز کریں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں