سردارعلی شاہنوازنےکشمیرکی صورتحال پر عالمی میڈیا اوررہنماؤں کے موقف کولائق تحسین قراردیدیا

اسلام آباد(سٹیٹ ویوز) کشمیریوں کی تنظیم کشمیر سکینڈے نیوین کونسل کے سربراہ سردار علی شاہنواز خان نےناروے میں پاکستانی سفارتخانے کے زیراہتمام یوم سیاہ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جدوجہد آزادی کا موجودہ مرحلہ غالباً سب سے مشکل اور افسردہ کن ہے۔ کیوں کہ بھارت کشمیر کی وحدت اور تشخص کو تبدیل کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔ جو کہ کشمیریوں کےلیے ناقابل قبول ہے۔

انہوں نے کہا کہ میںمظفرآباد میں مقیم مقبوضہ کشمیر کی قیادت ، آزاد کشمیر کی اعلی قیادت اور یقینا آزاد کشمیر میں بڑے پیمانے پر عوام کے ساتھ قریبی رابطے میں ہوں۔ اگرچہ صورت حال بہت تکلیف دہ ہے ، لیکن آپ کو یقین لاتاہوں کہ ہم بھارت کے حالیہ اقدامات کو قبول نہیں کریں گے۔ مزاحمت کریں گے۔ اور اس مزاحمت تحریک میں کوئی بھی شہری پیچھے نہیں رہے گا۔ بھارت کو اپنے کیے پر پچھتانا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ خوشی کی بات یہ ہے کہ بالاخردنیا کا ضمیر جاگنا شروع ہوگیا۔ کشمیر ہر سطح پر زیر بحث آنے لگا ۔ ملالہ یوسف زئی نے کشمیر پر چند ایک ٹویٹ کیے تولاکھوں لوگوں نے اسے پڑھا اور شیئر کیا۔پانچ اگست کے بعد کشمیر پر عالمی ذرائع بلاغ میں چھپنے والے مضامین، خبروں اور تبصروں کی ایک فہرست خوش کن بھی ۔ نیویارک ٹائمز نے پانچ اگست سے اب تک دو سو سے زائد ،واشنگٹن پوسٹ نے ایک سو تیس سے زائد خبریں اورتبصرے شائع یا نشر کیے۔ بی بی سی اور الجزیرہ تو روزانہ کی بنیاد پر خبریں اور تجزیہ نشر کرتے ہیں۔ اس سے اندازہ ہوتاہے کہ دنیا اندھیر نگری چوپٹ راج نہیں۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل انڈیا نے کرفیواور لاک ڈاؤن کے خاتمے کے حوالے سے ایک زبردست مہم شروع کی ۔ہزاروں لوگ اب تک اس مہم کا حصہ بن چکے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں