اپنی پوزیشن واضح کریں ورنہ، مولانا فضل الرحمٰن نے پیپلز پارٹی اور (ن) لیگ کو نئی مشکل میں ڈال دیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) جمعیت علمائے اسلام (ف)کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے پاکستان پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ (ن) سے اپنی پوزیشن واضح کرنے کا مطالبہ کر دیا۔ جے یو آئی (ف)کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی زیر صدارت اپوزیشن کی9 جماعتوں کی آل پارٹیز کانفرنس ہوئی، جس میں بلاول بھٹو اور شہباز شریف شریک نہیں ہوئے۔مولانا فضل الرحمان نے پیپلزپارٹی اور نون لیگ سے اپنی پوزیشن واضح کرنے کا مطالبہ کر دیا۔

سربراہ جے یو آئی ف نے نون لیگ اور پیپلزپارٹی سے استفسار کیا کہ دھاندلی زدہ حکمرانوں سے نجات چاہتے ہیں یا نہیں، جو بھی غاصب حکمرانوں کے سامنے تذبذب کا شکار ہوا تاریخ اسے معاف نہیں کرے گی، عوامی جماعتیں اختلافات اور چھوٹے چھوٹے مفادات کو عوامی مشکلات پر ترجیح نہ دیں۔ مولانا فضل الرحمان نے استفسارکیا کہ کیا حکمرانوں کے خلاف احتجاج صرف جے یو آئی ف کا فیصلہ تھا؟ ،آپ سب کو دعوت دیتا ہوں کہ مل کر عوامی حکمرانی کے لیے ٹھوس اور جامع حکمت عملی بنائیں۔

ذرائع کے مطابق، مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ خدارا عوام کی آنکھوں میں دھول نہ جھونکیں۔ سربراہ جے یو آئی ف نے پیشکش کرتے ہوئے کہا کہ آپ خلوص دل سے حکمت عملی بنائیں، جے یو آئی ف آپ کا ہر اول دستہ ہوگی، خواہش ہے کہ تمام جمہوری قوتیں مل کر کردار ادا کریں۔ دوسری جانب جے یو آئی نے اپنے قومی اسمبلی سے استعفے مولانا فضل الرحمان کے پاس جمع کراتے ہوئے انہیں مکمل اختیار دے دیا کہ وہ جب اورجہاں چاہیں ان استعفوں کو استعمال کیا جاسکتا ہے۔

اپوزیشن کی 9سیاسی جماعتوں میں سے 4سیاسی جماعتوں کے قائدین نے اے پی سی میں شرکت کی جبکہ 5سیاسی جماعتوں کے قائد آل پارٹیز کانفرنس میں شریک نہیں ہوئے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں