بھارتی اسکول میں 2 نابینا اساتذہ کی متعدد بار بصارت سے محروم طالبہ سے جنسی زیادتی

گجرات(ویب ڈیسک ) بھارت میں 2 نابینا اساتذہ نے گھناؤنی واردات کرتے ہوئے بصارت سے محروم کم سن طالبہ کو جنسی زیادتی کا نشانہ بناڈالا۔بھارتی ریاست گجرات کے علاقے امباجی میں انتہائی افسوس ناک واقعہ پیش آیا ہے۔ پولیس نے طالبہ سے جنسی زیادتی کے الزام میں دو نابینا اساتذہ 62 سالہ چمن ٹھاکر اور 30 سالہ جیانتی ٹھاکر کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔دونوں ملزمان نے استاد کے مقدس درجے کو داغدار کرتے ہوئے نجی ٹرسٹ کے اسکول میں چار ماہ تک 15 سالہ بچی کے ساتھ متعدد بار جنسی زیادتی کی۔

بچی چھٹیوں پر اپنی خالہ کے گھر آئی تھی اور نابینا بچوں کے اسکول واپس جانے سے انکار کردیا۔ جب اس سے وجہ پوچھی تو اس نے زیادتی کے بارے میں بتایا جس پر پولیس نے مقدمہ درج کرکے تحقیقات شروع کردیں۔ دونوں ملزمان فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے ہیں اور ان کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں۔بچی نے 8 سال تک اپنے گاؤں کے اسکول میں پڑھا اور پھر موسیقی سیکھنے باہر کے اسکول گئی تھی جہاں وہ ہاسٹل میں رہتی تھی۔ اس کے ساتھ موسیقی کی کلاس میں ہی زیادتی کی گئی۔ اسکول انتظامیہ نے دونوں ٹیچرز کو نوکری سے برطرف کردیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں