پلیٹ لیٹس کی کمی نوازشریف کی بیرون ملک روانگی میں آڑے آگئی

لاہور(نیوزڈیسک) سابق وزیراعظم نواز شریف کی طبیعت بدستور تشویشناک ہے جبکہ ان کی بیرون ملک روانگی میں پلیٹ لیٹس کی کمی آڑے آ گئی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ جب تک نواز شریف کے خون میں پلیٹ لیٹس میں توازن نہیں آتا، وہ سفر نہیں کرسکتے، شریف میڈیکل سٹی کے ڈاکٹرز اور نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے مسئلے کے حل کے لیے سر جوڑ لیے ہیں۔

سرکاری میڈیکل بورڈ کے سربراہ ڈاکٹر ایاز کے مطابق سفر کے لیے پلیٹ لیٹس کی تعداد 55 سے 60 ہزار ہونا لازم ہے۔سابق وزیراعظم کے پیلٹ لیٹس میں کمی دور کرنے کے لیے میڈیکل بورڈ نے بیرون ملک ماہرین سے مشاورت کا فیصلہ کر لیا ہے۔

یاد رہے کہ نوازشریف کی تشویشناک حالت کے پیش نظر 29 اکتوبر کو اسلام آباد ہائیکورٹ نے ان کی چھ ہفتوں کی ضمات منظور کی تھی۔

عدالت نے فیصلے میں لکھا تھا کہ آٹھ ہفتے بعد ضمانت میں مزید توسیع کرنا حکومت پنجاب کا اختیار ہو گا اور اگر اس حوالے سے درخواست نہ دی گئی تو پھر ضمانت منسوخ سمجھی جائے گی۔واضح رہے کہ مسلم لیگ ن کے قائد کو عدالت نے العزیزیہ ریفرنس میں 24 دسمبر 2018 کو سات برس قید سنائی تھی۔

عدالت نے اپنے فیصلے میں ان کے لیے دس سال کے لیے کسی بھی عوامی عہدے پر فائز ہونے پر پابندی، ان کے نام تمام جائیداد ضبط کرنے اور تقریباً پونے چار ارب روپے جرمانے کی سزا بھی سنائی تھی۔اس سے قبل پاناما کیس سے متعلق 28 جولائی 2017 کے سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں نیب نے ایون فیلڈ پراپرٹیز، العزیزیہ اسٹیل ملز اور فلیگ شپ انویسمنٹ سے متعلق ریفرنسز احتساب عدالت میں دائر کئے تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں