پراسراربیماری میں‌مبتلا بچی نے علاج کیلئے وزیراعظم اوروزیراعلیٰ پنجاب سے امیدیں باندھ لیں

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )راولپنڈی کے رہائشی محمداکرم کی 13سالہ بیٹی عرصہ 7سال سے پراسراربیماری میں مبتلا ہے۔ محمد اکرام نے میڈیا کے ذریعے حکومت اور مخیرحضرات سے مدداوربیماری سے متعلق گائیڈکرنے کی اپیل کی ہے۔

محمد اکرام کا کہنا ہے کہ بچی کی والدہ گردہ فیل ہونے کی وجہ سے وفات پاچکی ہے اور میں بیٹی کی اس بیماری کی وجہ سے کام کاج نہیں کرسکتا، بیماربیٹی جوروحانی بیماری کے ساتھ ساتھ اورجسمانی طورپربھی کئی بیماریوں میں مبتلاہے ، کھانے پینے اورہاضمے کے مسائل کابھی سامناہے جبکہ کھانے میں گوشت اوردودھ کے علاوہ اورکوئی بھی چیزنہیں کھاتی ۔ نیم بے ہوشی کے عالم میں صرف دودھ اورگوشت کا اشارہ کرتی ہے اورکھانا نہ ملنے کی صورت میں اپنے ہاتھوں کی انگلیاں نوچتی ہے جس سے ہاتھوں اوربازوپرزخم کے نشان واضح ہیں۔

مریض بیٹی کی ضروری دیکھ بحال کیلئے باپ کے علاوہ کوئی سہارانہیں ہے جس وجہ سے باپ کام کاج بھی نہیں کرپاتا۔محمداکرم شدیدکسمپرسی کی زندگی گزاررہاہے ، بیٹی کے علاج معالجہ کیلئے کوئی راستہ ہے نہ وسیلہ اورنہ ہی بیماری بیٹی کے کھانے پینے کی ضروریات پوری کرنے کی صلاحیت باقی ہے ، اس صورتحال میں نہ صرف مریض بیٹی کی زندگی کوعلاج سمیت کھانے پینے کاانتظام نہ ہونے کی صورت میں بھی خطرہ لاحق ہے۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ باپ اپنی بیٹی کی بیماری کے غم میں پریشان ہے۔ مخیرحضرات اور حکومت اس انسانی مسئلہ کوالمیہ بننے سے بچانے کیلئے اپناذمہ دارانہ کرداراداکریں۔علاج معالجہ کاراستہ بھی بتایاجائے اورمالی مددبھی کریں ، بصورت دیگردوانسانوں کی زندگی کوخطراہ لاحق ہے ۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں