آزادکشمیرحکومت کی کرپشن کا ایک اور سیکنڈل سامنے آگیا

مظفرآباد(رپورٹ:عبدالحکیم کشمیری)ایف ٹین اسلام آباد اکلاس کے 20کنال کے پلاٹ کی نیلامی میں 23کروڑ روپے کی مبینہ کرپشن،2ارب 61کروڑ 85لاکھ روپے کی بولی دینے والی کمپنی پاک چائنہ کنسٹرکشن کمپنی کو ٹیکنیکل بنیادوں پر نیلامی سے آؤٹ کرتے ہوئے جیری انٹرنیشنل کو 2ارب 51کروڑ میں سے مبینہ طور پر مزید 5فیصد چھوٹ دیتے ہوئے 2ارب 37کروڑ میں پلاٹ فروخت کرنے پر اتفاق کیاگیا۔

دونوں پارٹیوں جیری انٹرنیشنل اور پاک چائنہ کنسٹرکشن کمپنی کے ریٹ میں 23کروڑ روپے کے فرق کی صورت حال وزیر اعظم آزادکشمیر کے علم میں آئی تو انہوں نے جیری انٹرنیشنل کے حق میں اکلاس بورڈ کے چیئرمین کی حیثیت سے منظوری نہ دیتے ہوئے سیکرٹری اکلاس کو پاک چائنہ کنسٹرکشن کمپنی کی سماعت کے احکامات جاری کیے،پاک چائنہ کمپنی کے ایم ڈی عارف چوہدری کا کہنا تھا کہ میں نے 25فیصد ایڈوانس ادائیگی کا ڈرافٹ بنا کر رکھا تھا جبکہ 75فیصد رقم کی تین ماہ کے اندر ادائیگی کی بینک گارنٹی بھی دینے کو تیار تھا ۔کہ ہمیں تکنیکی بنیادوں پر آئوٹ کیا گیا۔12ستمبر کی نیلامی میں ہم شامل ہوئے۔اس کا ریکارڈ ہمارے پاس محفوظ ہے۔

اس کے بعد کے ایک اور اشتہار دیا گیا جس پر میں نے 25فیصد ادائیگی پر قبضے کی شرط رکھی۔میری شرط زبانی تسلیم کی گئی اور بعد ازاں پلاٹ کم قیمت پر نیلام کر دیا گیا۔اس طرح اکلاس کے بااثر مافیا نے 23کروڑ روپے کا قومی خزانے کو نقصان پہنچایا۔ذرائع کے مطابق اس ڈیل میں اکلاس کے اعلیٰ آفیسران کے علاوہ ایک ضلع کا ڈپٹی کمشنر بھی شامل ہے۔19نومبر کو پلاٹ کی نیلامی کے دوسرے دن 20نومبر کو پاک چائنہ کنسٹرکشن کمیٹی نے وزیراعظم کو درخواست دی جس پر سیکرٹری اکلاس نے گزشتہ روز سماعت کی اب ایک مرتبہ پھر رپورٹ وزیر اعظم کو پیش کی جائے گی۔r

اپنا تبصرہ بھیجیں