وزیر اطلاعات آزادکشمیر ہاتھ میں بندوق تھامے بھارت کی طرف سے آزادکشمیر پر حملے کا انتطار کرنے لگے

اسلام آباد(سید عامر گردیزی ،سٹیٹ ویوز ) بھارت کے نئے آرمی چیف جنرل منوج موکنڈ نراوانے بطور انڈین آرمی چیف عہدے کا حلف لینے کے بعد آزادکشمیر کے حوالے سے اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ پارلیمنٹ اگر چاہے تو آزاد کشمیر بھی ہمارا ہوسکتا ہے-

جس کے بعد ڈی جی آئی ایس پی آرسمیت وزیر اعظم آزادکشمیر نے بھارتی آرمی چیف کو آڑے ہاتھوں لیا تھا—اس حوالے سے ڈی جی آئی ایس پی آر کا بھارتی آرمی چیف کے بیان پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہنا تھا کہ بھارت آئے روز اپنے ملک کی اندرونی صورت حال پر سے اپنے عوام کی توجہ ہٹانے کے لیے اس طرح کے بیانات دیتا رہتا ہے-

جھنیں زیادہ سیریس نا لیا جائے —اور اگر بھارت نے ایسی کوئی حرکت کی تو پاک فوج اسے بروقت جواب دے گی-

جبکہ دوسری طرف وزیراعظم آزادکشمیر نے بھی بھارتی آرمی چیف کے بیان پر شدید ردعمل  دیتے ہوئے بھارتی آرمی چیف کے بیان پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہنا تھا کہ جنرل منوج موکنڈ نراوان ہم لائن آف کنٹرول پر تمہارا انتظار کررہے ہیں-

پاک سرزمین کی جانب بڑھ کر دیکھو-ہندوستانی فوج کے پاس اتنے تابوت نہیں جتنے تم جنازے اٹھاؤ گے- آزادکشمیر کی جانب اگر ہندوستانی فوج بڑھی تو ہم سب اپنی فوج کے شانہ بشانہ لڑینگے -مقبوضہ کشمیر میں پتھروں سے ڈرنے والی فوج میں اتنی ہمت نہیں کہ آزادکشمیر کی طرف میلی آنکھ سے دیکھے-

ڈی جی آئی ایس پی آر اور وزیر اعظم آزادکشمیر کی طرف سے بھارتی آرمی چیف کے بیان کے رد عمل کے بعد اب وزیر اطلاعات آزاکشمیر مشتاق مہناس بھی بھارتی آرمی چیف کے آزادکشمیر پر حملے کے بیان کیخلاف کھل کر سامنے آ گئے-

تفضیلات کے مطابق وزیر اطلاعات آزاکشمیر نے آج اپنے ٹویٹر اکاؤںٹ پر بندوق ہاتھ میں اٹھائے ایک تصویر شیئر کرتے ہوئے بھارتی آرمی چیف کو مخاطب کیا اور کہا کہ جنرل منوج موکنڈ نراوا ہم آپ کا انتظار کر رہے ہیں-

یاد رہے بھارتی آرمی چیف کے بیاں کیخلاف ڈی جی آئی ایس پی آر اور وزیر اعظم آزادکشمیر کے ردعمل کے جواب میں‌ بھارتی قیادت کی طرف سے کسی قسم کا بیان سامنے نہیں‌آیا-

اپنا تبصرہ بھیجیں