پنجاب حکومت اورانڈونیشاکے تعاون سے منعقدہ زرعی نمائش کا افتتاح ملک لنگڑیال اور سردارتنویر الیاس نےکردیا

لاہور(سٹاف رپورٹر/سٹیٹ ویوز)ایکسپو سنٹر لاہور میں انڈونیشیا اور پنجاب حکومت کے تعاون سے زرعی نمائش کا انعقاد کیا گیا۔ پنجاب کے وزیر زراعت ملک نعمان احمد لنگڑیال ، پنجاب

سرمایہ کاری بورڈ و ٹریڈ کے چیئرمین سردار تنویر الیاس خان اور پاکستان میں انڈونیشیا کے سفیر نے نمائش کا افتتاح کیا۔ نمائش میں36 غیر ملکی وفود نے بھی شرکت کی۔ ہر سال جنوری اور

جون میں زراعت کی بڑی ایکسپو کا انعقاد کیا جا رہا ہے اور یہ اس سلسلے کی چوتھی نمائش ہے۔ زرعی ایکسپو میں انڈونیشیا اور دیگر ممالک نے بھی سٹال لگائے ہیں۔ جرمنی ،یورپ اور مشرق وسطیٰ کے ممالک سے وفود نے بھی نمائش میں شرکت کی۔

پنجاب کے وزیر زراعت ملک نعمان احمد لنگڑیال مہمان خصوصی اور چیئرمین پنجاب سرمایہ کاری بورڈ و ٹریڈ سردار تنویر الیاس خان گیسٹ آف آنر تھے۔ پنجاب سرمایہ کاری بورڈ و ٹریڈ وزارت زراعت کے ساتھ ملکر سال میں دو بار اس ایکسپو کا انعقاد کرتا ہے۔

اس سے پہلے گزشتہ سال جون میں اس نمائش کا اہتمام کیا گیا اور اب جنوری کے بعد اس سال جون میں دوبارہ اس کا انعقاد کیا جائے گا۔ اس نمائش کا مقصد پاکستان میں پیدا ہونے والے پھلوں اور سبزیوں کی نمائش کرنا ہوتا ہے۔ اس سال نمائش میں کینو کی بیج کے بغیر چار قسمیں پیش کی گئی ہیں ۔

اسی طرح زراعت کے محکموں نے کسانوں کے ساتھ ملکر آلو کی مختلف قسمیں تیار کی ہیں خاص طور پر چپس کےلئے درکار آلو تیار کئے گئے ہیں جس کی فصل مارکیٹ میں دستیاب ہے۔ پنجاب سرمایہ کاری بورڈ و ٹریڈ کے چیئرمین سردار تنویر الیاس خان نے کہا کہ نمائش میں شرکت کےلئے آئے ہوگئے غیر ملکی وفود کو اوکاڑہ، ساہیوال، چیچہ وطنی اور دیگر علاقوں کے دورے بھی کروا رہے ہیں-

جہاں پر یہ فصلیں تیار ہوتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب سرمایہ کاری بورڈ و ٹریڈ کی یہ ذمہ داری ہے کہ محمکہ زراعت کے ساتھ تعاون کریں تاکہ ملکر زرعی پیداوار کو زیادہ سے زیادہ بڑھایا جاسکے۔

سردار تنویر الیاس خان نے کہا کہ پنجاب سرمایہ بورڈ و ٹریڈ اس نمائش میں وزارت زراعت کی مدد کر رہا ہے اور جون میں ہونے والی نمائش میں لاجسٹک سپورٹ بھی فراہم کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ مرچ، شملہ مرچ کی فصلیں ہیں اس کے علاوہ ہم امرود دنیا کو ضرورت کا3.5 فیصد فراہم کر رہے ہیں اس کے علاوہ ہمارا یہ مقصد ہے کہ جدید کاشتکاری کو متعارف کرایا جائے۔

انہوں نے کہا کہ کینو اور امرود کے ہائبرڈ کے علاوہ گاجر کے بیج پر کام ہو رہا ہے یہ اس ایکسپو میں رکھا گیا ہے تاکہ دیگر ممالک بھی ہمارے زراعت کے محکموں کے ساتھ مل کر تحقیق کو آگے بڑھا سکیں اور اپنے ملکوں میں اسے متعارف کروا سکیں سرداری تنویر الیاس نے کہا کہ نمائش میں تاجکستان نے بھی بڑا سٹال لگایا ہے اور تاجکستان کےساتھ ہمارا زراعت میں اشتراک ہے اور اسے ہم مزید فروغ دینا چاہتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں