تحریک انصاف آزادکشمیر کےچند عہدیداران پارٹی کارکنان سے خوفزدہ،آج اجلاس میں شامل نہ ہونے کا فیصلہ

اسلام آباد(شہزاد خان/سٹیٹ ویوز) تحریک انصاف آزادکشمیر کے صدر بیرسٹرسلطان محمود نے آج جمعرات کو پارٹی سیکریٹریٹ میں پارٹی عہدیداران اورکارکنان کااجلاس طلب کیا ہے۔پارٹی ذرائع نے اجلاس بلانےکی وجہ یہ بتائی ہے کہ وزیراعظم پاکستان عمران خان کے 5 اور 6 فروری کو مظفرآباد اور میرپور کا دورے کے حوالے سے لائحہ عمل تیار کیاجانا ہے۔

میرپور میں وہ ایک جلسہ عام سے خطاب کریں گے۔یہ جلسہ پی۔ٹی۔آئی آزادکشمیر کیلئے اہمیت کا حامل قرار دیا جارہا ہے جس سے پارٹی کا آزاد کشمیر میں مستقبل وابستہ ہے۔

تحریک انصاف آزادکشمیر سیکریٹریٹ کے مطابق پارٹی اجلاس کا اعلان بلاتخصیص میڈیا اور سوشل میڈیا پر کیا گیا ہےجس میں جو شامل ہونا چاہے وہ ہو سکتا ہے۔

سٹیٹ ویوز کو ذرائع نے بتایا ہے کہ اس اجلاس کے لئے دعوت عام کے اعلان کیوجہ سے بیرسٹر مخالف سات عہدیداران کا گروپ شدید مشکلات کا شکار ہوگیا ہے۔اگر بیرسٹر مخالف مرکزی عہدیداران اجلاس میں شریک نہیں ہوتے تو پارٹی کی بڑی سرگرمی سے لاتعلق ہو جائیں گے اور اگر شامل ہوتے ہیں تو مشتعل کارکنان انہیں آڑے ہاتھوں لے سکتے ہیں۔

مشتعل کارکنان کا کہنا ہے کہ بیرسٹر مخالف لابنگ کرنے والے عہدیداران کی پارٹی کے اندر کوئی جگہ نہیں ہے اس لئے انہیں پارٹی کے کسی اجلاس۔جلوس۔جلسے میں بلایا گیا تو کسی ناخوشگوار واقعے کی ذمہ داری بیرسٹر سلطان محمود چوہدری اور پارٹی کے متذکرہ عہدیداران پر عائد ہوگی۔

سٹیٹ ویوز کو بتایا جارہا ہے کہ پارٹی کارکنان ہی کے دباؤ پر بیرسٹر سلطان محمود نے اعلیٰ قیادت کو آگاہ کیا ہے کہ وہ ان عہدیداران کے ساتھ ملکر پارٹی نہیں چلا سکتے کیونکہ انکے رجوع کرنے کے باوجود پارٹی کارکنان انہیں قبول نہیں کر رہے اور مشتعل ہیں۔

دوسری جانب پارٹی کے سیکریٹری جنرل راجہ مصدق نے چند روز قبل پارٹی کارکنان کا اجلاس بلایا جس میں مبینہ طور پر عہدیداران سمیت صرف 20 سے 25 لوگ شریک ہوئے اور اس اجلاس میں مصدق خان نے بیرسٹر کے خلاف اعلان جنگ کیا تھا۔

مصدق خان کیجانب سے اعلان جنگ کے بعد اطلاع ملی کہ انکے گروپ کے بعض پارٹی کارکنان نے بیرسٹر سلطان محمود سے رجوع بھی کیا لیکن انہیں پذیرائی نہ مل سکی۔

اب بتایا جارہا ہے کہ بیرسٹر سلطان محمود کے مخالف سات پارٹی عہدیداران نے مشتعل کارکنان کی جانب سے ردعمل کے خوف سے پارٹی اجلاس میں شمولیت سے انکار کیا ہے اورفیصلہ کیا ہے کہ پارٹی اجلاس میں شامل ہوئے بغیر بیرسٹر سلطان سے میرپور کے جلسے کیلئے اپنی خدمات پیش کریں گے جبکہ دوسری جانب سے اطلاع ہے کہ پارٹی کے عہدیداران اورکارکنان کے اجلاس میں ہی عمران خان کے جلسے کی تیاریوں کے حوالے سے ہی ذمہ داریاں تفویض کی جائیں گی۔بتایا جارہا ہے کہ خوفزدہ ہونے والے عہدیداران میں سیکریٹری جنرل راجہ مصدق،ایڈیشنل سیکریٹری راجہ منصور،سردارمرتضیٰ۔قاضی اسرائیل،سیکریٹری مالیات ذوالفقار عباسی اور دیگر شامل ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں