2کلو گوشت چوری کرنے کے الزام ۔۔7سالہ بچے کو حوالات میں بند کر دیا گیا

کوئٹہ (ویب ڈیسک) دو کلو گوشت چوری کرنے کے الزام میں پولیس نے 7سال بچے کو حوالات میں بند کر دیا۔تفصیلات کے مطابق زرغون آباد پولیس نے ایک گھر سے 2 کلو گوشت چوری کرنے کے الزام میں 7 سالہ بجے کو لاک اپ میں بند کر دیا۔بتایا گیا ہے کہ کوئٹہ کے علاقے میں نواکلی سے زغون آباد پولیس نے دو روز قبل چوری کے الزم میں 3 نوجوانوں کو گرفتار کیا تھا قابل غور بات یہ ہے کہ ملزمان میں ایک بچہ بھی شامل تھا جس کی عمر سات سال بتائی گئی ہے۔

کم سن بچے کی گرفتاری کے کچھ دیر بعد مدعی محمد عثمان کو معلوم ہوا کہ اس نے کیس غلط فہمی کی بنیاد پر درج کرایا جس پر اس نے تھانے میں حلفیہ بیان بھی جمع کرایا لیکن اس کے باوجود پولیس نے اس بچے کو رہا نہیں کیا۔تاہم بعد میں ڈی آئی جی کے حکم پر 7 سالہ بچے کو اور اس کے دو کزنز کو رہائی مل سکی۔حوالات میں بند 7 سالہ بچے کی تصاویر اور ویڈیوز بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی جس ر صارفین کی طرف سے سخت برہمی کا اظہار بھی کیا گیا۔

اس سے قبل لاہور میں یہ واقعہ پیش آیا جہاں دو بچوں کو آلو چوری کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا۔ پولیس اہلکار نے بتایا کہ یہ دونوں معصوم بچے لاہور کی سبز منڈی میں بلیٹ کے ساتھ آلو والی بوریوں کو کاٹ کر ان میں سے آلو چوری کرتے تھے اور یہ تقریبا 2ماہ سے اسی طرح سے چوری کر رہے تھے کہ ان کو تنگ آ کر حوالات میں بند کرنا پڑا ہے تاکہ ان کے والدین کو بتایا جا سکے کہ بچوں سے چوری نہ کروائیں اور یہ عمر بچوں کے پڑھنے لکھنے کی ہے۔

اسی طرح اسٹریٹ کرائمز کو کنٹرول کرنے سے قاصر رہنے والی کراچی پولیس نے موٹر سائیکل چوری کے الزام میں دو کم سن بچوں کو گرفتار کیا تھا۔11سالہ اجلال چوتھی اور12سالہ محسن پانچویں جماعت کے طالب علم تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں