سابق صدر کرپشن کے الزامات سے لڑتے لڑتے انتقال کر گئے

قاہرہ (ویب ڈیسک) مصر کےسابق صدر حسنی مبارک 91 برس کی عمرمیں انتقال کر گئے۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق حسنی مبارک پر کرپشن کے الزامات تھے، حسنی مبارک2011 میں احتجاجاً مستعفی ہوگئے تھے، حسنی مبارک1981 سے 2011 تک مصر صدر رہے۔ ان کے چند روز پہلے طبیعت خراب ہونے پر آئی سی یو میں منتقل کیا گیا تھا-ذرائع نے بتایا ہے کہ انہیں فالج کا اٹیک ہوا تھا۔ واضح رہے کہ مصر کے سابق صدر حسنی مبارک کی تازہ ترین تصویر نے سوشل میڈیا کے صارفین کو دھچکا پہنچایا ہے-

کیوں کہ تصویر میں مبارک پر واضح طور پر بڑھاپے اور عمر رسیدہ ہونے کی علامات ظاہر ہو رہی ہیں۔ تصویر میں 90 سالہ سابق صدر کے چہرے پر جھرّیوں اور سر میں سفید بالوں کے علاوہ وزن میں اضافہ بھی نوٹ کیا گیا ہے۔ حسنی مبارک 4 مئی 1928ء کو پیدا ہوئے۔ وہ “انقلاب جنوری” کے نتیجے میں فروری 2011ء میں اقتدار سے سبک دوش ہو گئے تھے۔

مصر کے سابق صدر انقلاب کے دوران مظاہرین کی ہلاکت کے مقدمے سے بری ہونے کے بعد پہلی مرتبہ دو برس قبل اپنے اہل خانہ کے ساتھ ایک سیاحتی مقام پر نمودار ہوئے تھے۔ اُس وقت حسنی مبارک کے چہرے پر مسکراہٹ اور صحت اچھی نظر آ رہی تھی۔

مزید پڑھیں

تشہیر نہیں ریلیف۔۔۔!!! وزیراعظم عمران خان کا یوٹیلٹی سٹورز پر اپنی تصاویر دیکھ کر سخت برہم، انتظامیہ کو بڑا حکم جاری کر دیا

اپنا تبصرہ بھیجیں