کورونا۔۔۔ دنیا کے ارب پتیوں نے خزانے کے منہ کھول دیے

رپورٹ: راجہ خرم زاہد

سال 2019ء کے آخر میں چین کے شہر ووہان سے شروع ہونے والے کورونا وائرس نے اب تقریبا دنیا بھر کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے۔ دنیا بھر میں 4 لاکھ کے قریب افراد تا حال کورونا سے متاثر ہو چکے ہیں جبکہ 17 ہزار سے زائد لوگ لقمہ اجل بن گئے، دنیا بھر کے سائنسدان کورونا کی ویکسین کی تیاری میں مگن ہیں مگر تا حال احتیاط کے علاوہ اس کا کوئی علاج دریافت نہیں ہو سکا۔ ترقی یافتہ ممالک سے لے کر غریب ممالک تک یہ وبائی مرض پہنچ چکا ہے،ایک طرف حکومتیں اپنے عوام کو ریلیف اور معیشت کو سنبھالنے کے لیے اربوں روپے لگا رہی ہیں تو دوسری طرف دنیا بھر کے ارب پتی بھی کورونا سے نمٹنے کے لیے اپنے خزانے کی تجوریاں کھول رہے ہیں۔

دنیا بھر کے امیر افراد پر اگر نظر ڈالی جائے تو ان میں مائکروسافٹ کے بانی بل گیٹس کے نام سے تقریبا دنیا کے ہر خطے میں رہنے والے لوگ واقف ہیں۔ بل گیٹس اور ان کی اہلیہ ملینڈا گیٹس کی تنظیم بل اینڈ میلنڈا گیٹ فائونڈیشن نے عالمی سطح پر کورونا وائرس کی تشخیص، آئسولیشن اور علاج میں مدد کے لیے 100 ملین فراہم کرنے کا اعلان کیا ہے۔
جیف بیزوس (ایمیزون)

جیف بیزوس نے 1 لاکھ لوگوں کو بھاری تنخواہوں پر رکھنے کا فیصلہ کیا ہے جو کورونا وائرس کے پھیلائو کی وجہ سے ضروری طبی اور گھریلو اشیا کی ترسیل کو ترجیحی بنیادوں پر یقینی بنائیں گے۔

جیک ما (بانی علی بابا)

امیر ترین چینی شخص جیک ما جو علی بابا کمپنی کے مالک ہیں نے 14 ملین ڈالر کورونا کی ویکسین بنانے کے لیے، 18 لاکھ ماسک، 2 لاکھ 10 ہزار ٹیسٹنگ کٹس،36 ہزار حفاظتی سوٹ جو ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل اسٹاف کے لیے ہیں)، وینٹی لیٹرز اور تھرمامیٹرز پاکستان سمیت ایشیائی ممالک کو عطیہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔ جیک نے 5 لاکھ ٹیسٹنگ کٹس اور 10 لاکھ ماسک امریکہ کو بھی عطیہ کیا ہے۔

اسٹیو بالمر (سابق سی ای او مائکروسافٹ)

اسٹیو بالمر نے امریکہ میں سماجی تنظیموں کو 10 لاکھ ڈالر کا عطیہ کیا ہے۔

جارجیو ار مانی (فیشن ڈیزائنر، ارمانی گروپ)

جارجیو ارمانی نے اٹلی میں کورونا وائرس کی وبا سے نمٹنے کے لیے 14 لاکھ ڈالر امداد کا اعلان کیا۔

سلویو برلسکونی (سابق اطالوی وزیراعظم)

سلویو اٹلی کے وزیراعظم بھی رہ چکے ہیں اور حالیہ کورونا وائرس میں اٹلی میں ہلاکتوں کی تعداد دنیا بھر میں سب سے زیادہ ہے، سلویو نے اٹلی میں نئے ہسپتال بنانے کے لیے 11 ملین ڈالر کے قریب رقم دینے کا اعلان کیا ہے۔

مائیکل بلومبرگ (میڈیا ٹائیکون)

مائیکل بلوم برگ نیو یارک کے سابق میئر اور امریکی کاروباری شخصیت ہیں، مائیکل معروف میڈیا کمپنی بلوم برگ کے شریک بانی بھی ہیں۔ مائکل بلومبرگ نے کورونا وائرس کا پھیلائو روکنے کے لیے کم اور درمیانی آمدنی والے ممالک کو 40 ملین ڈالر دینے کا اعلان کیا ہے۔

ریڈ ہیسٹنگز، (سی ای او نیٹ فلکس)

معروف اسٹریمنگ سروس نیٹ فلکس کے سی ای او نے ایسے ہنر مند افراد کے لیے 100 ملین ڈالر کا اعلان کیا ہے جو اپنے شعبے میں ماہر ہیں لیکن کام نہیں کر رہے۔ ان افراد کو پروجیکٹس کی بنیادوں پر گھنٹے کے حساب سے پیسے دیے جائیں گے۔

لی کا شنگ (امیر ترین ہانگ کانگ شہری)

ہانگ کے ارب پتی لی کا شنگ نے ووہاں میں طبی عملے کی امداد کے لیے 13 ملین ڈالر عطیہ کیے۔

فیس بک۔

سماجی رابطوں کے معروف پلیٹ فارم فیس بک کورونا وائرس کے بین الاقوامی فیکٹ چیکنگ نیٹ ورک کے لیے 1 ملین ڈالر کا اعلان کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں