جماعت اسلامی پونچھ نے اپنے فلاحی کام جاری رکھنے کیساتھ حکومت اور عوامی نمائندگی کے سیاسی دعویداروں کو بھی جھنجوڑ کر رکھ دیا

راولاکوٹ (سٹیٹ ویوز)نائب امیر و وفوکل پرسن جماعت اسلامی ضلع پونچھ سردار قیوم افسر خان نے کہا ہے کہ حکومت آزاد کشمیر کو محکمہ برقیات اور محکمہ آب رسانی کو بلات لینے سے روکنا چاہیے تعلیمی اداروں کو بھی مارچ سے جون تک کی فیس نہیں لینی چاہیے اور حکومت آزاد کشمیر کو نجی تعلیمی اداروں کے سٹاف کو تنخواہوں کی ادائیگی کرنی چاہیے۔

سردار قیوم افسر نے کہا کہ ایسے موقع پہ جب شہر کے شہر لاک ڈاون ھیں اور لوگوں کے روزگار کے تمام دروازے بند ہو گے ھیں حکومت کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ لوگوں کی مالی معاونت کریں اور اگر وہ ممکن نہیں تو پھر بلات اور فیسوں کو معاف کر کے لوگوں کو ریلیف دیا جا سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ صورتحال میں جب لوگ مایوسی اور پریشانی کا شکار ہیں ایسے میں محکمہ صحت پولیس آرمی اور سول انتظامیہ کے ساتھ ساتھ جماعت اسلامی الخدمت فاونڈیشن اور سول سوسائٹرز کے لوگوں کا رول لائق تحسین ہے لیکن عوامی نمائندگی کے دعویدار فیلڈ سے غائب پائے جاتے ہیں۔

سردار قیوم افسر نے کہا کہ الیکشن کے دنوں میں اپنے پوسٹر اسٹکیر اور پینا فیلکس بینرز پہ لاکھوں روپے لگانے والوں کو اس موقعہ پہ یونین کونسل کی سطح پہ ان لوگوں کے دو وقت کے کھانے کا اھتمام کرنا چاہیے تھا جو موجودہ صورتحال میں چھوٹے چھوٹے کام بند ہو جانے کی وجہ سے مکمل طور پہ بےروزگار ھوگے ھیں اور اس سفید پوشی کے عالم میں بھی کسی کے آگے ہاتھ نہیں پھیلا سکتے۔

سردار قیوم افسر نے کہا کہ جماعت اسلامی ھر ایک بحران میں فیلڈ میں موجود تھی ھے اور رھے گی سیلاب ۔زلزلے اور اب اس وبائی مرض میں جماعت اسلامی اور الخدمت فاونڈیشن کے رضاکار موجود ہیں اور انشاءاللہ اللہ رب العزت کی اس آزمائش میں بھی سرخرو ہونگے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں