تقدیس گیلانی کی حکومت کو ترقیاتی بجٹ صحت اور راشن پر لگانے کی تجویز

اسلام آباد(نیوزڈیسک)پی ٹی آئی آزاد کشمیر خواتین ونگ کی صدر پروفیسر تقدیس گیلانی نے کہا ہے کہ کرونا وائرس کی وباء کے بعد پوری دنیا میں غربت، افلاس، بھوک اور صحت کے سنگین مسائل سامنے آ رہے ہیں، آنے والے دنوں میں آزاد حکومت کیلئے بھی لوگوں کا راشن اور صحت کی سہولیات سب سے بڑے چیلنج بن کر سامنے آئیں گے۔ ماضی میں جب بھی آزاد خطے پر کوئی بحران آیا تو پاکستان نے آگے بڑھ کر اسے اپنے زمہ لیا لیکن حالیہ وقت میں پاکستان سمیت ساری دنیا کرونا وائرس کے بحران سے دوبار ہے، ایسے میں ہماری حکومت کو اپنی عوام کے تمام تر مسائل کیلئے خود ہی انتظامات کرنا ہونگے۔ موجودہ صورتحال میں آزاد حکومت کے پاس بہترین راستہ ہے کہ ایک سال کیلئے تمام ترقیاتی و صوبدیدی فنڈز لوگوں کے راشن و صحت پر صرف کیے جائیں۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے اپنے بیان میں کیا۔

انھوں نے کہا کہ پوری دنیا اس وقت جنگی صورتحال سے دوچار ہے۔ ان حالات میں ہمارے حکمرانوں کو کسی پر توقع رکھنے، آس لگانے یا بوجھ بننے کے بجائے اپنے دستیاب وسائل بروئے کار لانے چاہیں۔ پروفیسر تقدیس گیلانی نے کہا کہ آزاد خطہ میں اگر گزشتہ تہتر برس سے تعمیر و ترقی نہیں ہو سکی تو ایک سال مزید نہ سہی، اس وقت انسانوں کی زندگیاں بچانا اور انکی بھوک ختم کرنے کیلئے اقدام اٹھانا زیادہ اہم ہے۔

انھوں نے کہا کہ آزاد کشمیر کے تمام انٹری پوائنٹس بند ہونے کے باعث دیہاڑی دار طبقہ شدید مشکلات کا شکار ہے۔ ہمارے خطے میں روزگار کے مواقع نہ ہونے کے برابر ہیں، پاکستان میں کام کرنے والا ہمارا مزدور طبقہ بھی حالیہ وباء کے پیش نظر گھروں کو لوٹ آیا ہے، روزگار و راستے بند ہونے کے باعث شدید غذائی قلعت پیدا ہو رہی ہے۔ جس پر قابو پانے کیلئے حکومت کو جنگی بنیادوں پر اقدام اٹھانے کی ضرورت ہے۔ اگر تمام تر ترقیاتی و صوبدیدی فنڈز شفاف طریقے سے عوام کی غذائی و صحت کی ضروریات پر صرف کیے جائیں تو حکومت کو بحران پر قابو پانے میں کافی حد تک مدد مل سکتی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں