آزاد جموں کشمیرقانون سازاسمبلی اجلاس میں کون سے مسودے منطور ہوئے اور دیگر کن امور پر بحث ہوئی، تفصیلی رپورٹ

مظفرآباد(سٹیٹ ویوز)آزادجموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی کا اجلاس بدھ کے روز سپیکر شاہ غلام قادر کی زیر صدارت تلاوت کلام پاک سے شروع ہوا۔ اجلاس میں وزیر قانون سردار فاروق احمد طاہر نے مسودہ قانون ”The Azad Jammu and Kashmir Medical Colleges (Governing Body Amendment) Act, 2020.ایوان میں پیش کیا جسے ایوان نے اتفاق رائے سے مجلس منتخبہ کے سپرد کر دیا. سپیکر شاہ غلام قادر کی زیر صدارت بدھ کے روز آزادجموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی کے اجلاس میں وقفہ سوالات کے دوران ممبر اسمبلی عبدالماجد خان کے سوال کے جواب میں وزیر قانون سردار فاروق احمد طاہر نے کہا کہ بجٹ بک 2019-20کے مطابق محکمہ مال میں نائب تحصیلدار کیڈر کی کل58آسامیاں منظور شدہ ہیں جن میں سے مظفرآباد ڈویژن کیلئے18، پونچھ ڈویژن کیلئے19جبکہ میرپور ڈویژن کیلئے21آسامیاں ہیں۔

ان آسامیوں کو بروئے حکم نائب تحصیلدار کیڈر میں ظاہر کیا گیا ہے۔ آزادجموں وکشمیر ریونیو ڈیپارٹمنٹ، پٹواری، قانونگو، نائب تحصیلدار و تحصیلدار سروس رولز2014کے شیڈول میں شمار دو کے تحت نائب تحصیلدار کی آسامی پر محکمانہ ترقیابی (گرداوران) کیلئے 45فیصد کوٹہ مختص کیا گیا ہے۔ اس طرح مظفرآباد ڈویژن میں محکمانہ ترقیابی کوٹہ کی آسامیوں کی تعداد8، میرپورڈویژن9جبکہ پونچھ ڈویژن میں 9ہے۔انہوں نے کہاکہ آزادجموں وکشمیر ریونیو ڈیپارٹمنٹ، پٹوار، قانونگو، تحصیلدار سروس رولز2014کے شیڈول میں شمار2کالم نمبر8کی کلاز2(a)کے تحت نائب تحصیلدار کی آسامی پر کلریکل سٹاف سے ترقیابی کیلئے5فیصد کوٹہ مختص کیا گیا ہے۔

سال2014کے بعد پبلک سروس کمیشن کے زیر اہتمام مقابلہ کا امتحان پاس کرنا لازمی قراردیا گیا ہے۔ ان قواعد کے تحت کلریکل سٹاف کی ترقیابی کی شرح2.90یونی تین آسامیاں بنتی ہیں۔ قواعد2014کے تحت کلریکل سٹاف سے کسی بھی اہلکار کو بطور نائب تحصیلدار ترقیاب نہیں کیا گیا البتہ سابق قواعد1991کے تحت مظفرآباد ڈویژن میں سے3میرپور سے بھی3اور پونچھ سے 7اہلکاران بطور نائب تحصیلدار باقاعدہ ترقیاب شدہ ہیں۔ انہوں نے کہاکہ آزادجموں وکشمیر ان لینڈ ریونیو ڈیپارٹمنٹ، پٹواری، قانونگو، نائب تحصیلدار و تحصیلدار سروس رولز1991کے شیڈول میں نمبر شمار2کے تحت نائب تحصیلدار کی آسامی پر بذریعہ پبلک سروس کمیشن ابتدائی تقرری کیلئے50فیصد کوٹہ مختص کیا گیا تھا اس کوٹہ کے خلاف بورڈ آف ریونیو کی سطح سے مورخہ07-03-2008کو ایک نائب تحصیلدار کی تقرری عمل میں لائی گئی بعدازاں پبلک سرو س کمیشن کے تحت براہ راست کوٹہ پر کل 30نائب تحصیلداران بھرتی ہوئے تھے جن میں سے بعدازاں محکمہ جات میں بالا سکیل میں ملازمت کے نتیجہ میں 02نائب تحصیلدار مستعفی ہو گئے۔

اس وقت براہ راست کوٹہ کے خلاف بذریعہ بورڈ آف ریونیو ایک اور بذریعہ پبلک سروس کمیشن 28نائب تحصیلدار تعینات ہیں۔ انہوں نے کہاکہ بجٹ بک مجریہ سال2019-20کے مطابق محکمہ مال میں تحصیلدار کی کل35آسامیاں منظور شدہ ہیں جن میں سے مظفرآباد ڈویژن کیلئے11، پونچھ ڈویژن کیلئے12اور میرپور ڈویژن کیلئے بھی12آسامیاں ہیں۔ انہوں نے کہاکہ 90فیصد ترقیابی کوٹہ کی کل 32آسامیاں بنتی ہیں جن میں سے17کے خلاف باقاعدہ ترقیابی عمل میں لائی گئی ہے۔ قواعد 2014کے تحت تحصیلدار کی آسامیوں پر ترقیابی کیلئے کلریکل کوٹہ مختص نہیں ہے۔ اس وقت ترقیابی ازاں نائب تحصیلدار کوٹہ کے تحت17،براہ راست کوٹہ کے تحت7اور سابق قواعد 1991کے تحت کلریکل سٹاف کوٹہ کے خلاف ترقیاب شدہ 04اور کل28تحصیلداران مستقل بنیادوں پر ترقیاب شدہ ہیں۔ ترقیابی کوٹہ کی 7خالی آسامیوں کے خلاف مستقل ترقیابی کی کارروائی عدالت العالیہ میں زیرکار مقدمات کی سماعت کے باعث فی الوقت زیر التواء ہے۔ عدالتی فیصلہ صادر ہونے پر ان آسامیوں کے خلاف باقاعدہ ترقیابی کیلئے معاملہ سلیکشن بورڈ نمبر3میں پیش کیا جائے گا۔

وزیر قانون نے کہاکہ حکومت پنجاب کی طرز پر آزادکشمیر میں نائب تحصیلداران، گرداوران و پٹواریان کو فکس TAکی ادائیگی کیلئے31-12-2015کو بورڈ آف ریونیو کی سطح سے معاملہ محکمہ مالیات سے اٹھایا گیا۔ محکمہ مالیات نے بروئے نوٹیفکیشن مجریہ14جولائی2016صرف گردوران اور پٹواریان کی حد تک فکس TAکی ادائیگی کی منظوری دی۔ اب مورخہ07-05-2018کو نائب تحصیلدارن کو بھی فکس TAکی ادائیگی کیلئے محکمہ مالیات کو دوبارہ تحریک کی گئی ہے اور معاملہ محکمہ مالیات کی سطح پر زیر کار ہے۔ انہوں نے کہاکہ گزشتہ تین سالوں میں اصلاح و احوال اور بہتری کی نسبت متعدد اقدامات عمل میں لائے گئے۔ سابق ادوار میں نائب تحصیلداری سروس کیڈر میں آفیسران کی تعیناتی کے وقت کوٹہ کی خلاف ورزی ہوتی رہی۔ ذی غرض افراد کی جانب سے ماضی میں اندرون خانہ ملی بھگت کر کے اور عدالتی کارروائیوں کے نتیجے میں نائب تحصیلدار تعیناتی کے احکامات حاصل کی گئے اور مطابقاً عدالتی احکامات کی تعمیل میں ایسے افراد کو نائب تحصیلدار تعینات کرنا پڑا۔ اس امر کے سدباب کیلئے پسران کوٹہ کو حکومتی منظور ی حاصل کرتے ہوئے یکسر ختم کر دیا گیا ہے۔ مزید برآں منسٹریل کیڈر سے نائب تحصیلدار کی تعیناتی کیلئے پبلک سروس کمیشن پاس کرنا لازمی قرار دیاگیا ہے۔

تحصیلداری سروس کیڈر میں ترقیابی کیلئے مقرر شدہ منسٹریکل کوٹہ کو ختم کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ محکمہ ہذا میں نظم و نسق اور عمال کی کارکردگی میں بہتری لائے جانے خاطر اقدامات اٹھائے ہیں۔ سہ ماہی بنیادوں پرمحکمانہ جائزہ اجلاس کا انعقاد کیا جارہا ہے تاکہ ڈویژن سے تحصیل کی سطح تک کے آفیسران کی کارکردگی کا بروقع تجزیہ کرتے ہوئے احکامات صادر ہو سکیں۔ ہر سطح پر کارکردگی بہتر بنانے کیلئے باقاعدہ طور پر ورکشاپس کا انعقاد کیا جارہا ہے تاکہ اہلکاران کی صلاحیت او رکارکردگی میں بہتری لائی جا سکے۔ تبادلہ جات کیلئے ایک ہمہ گیر جامع پالیسی نافذ کی گئی ہے جس کی منشا یہ ہے کہ آفیسران کو ان کے آبائی سٹیشن پر تعینات نہ کیا جائے۔ کم از کم تعیناتی کا دورانیہ مقرر کرتے ہوئے اس پر عملدرآمد کیے جانے کے احکامات صادرکیے گئے ہیں جس کامطمع نظر ہے کہ تمام آفیسران واہلکاران کو فیلڈمیں تعیناتی کے یکساں مواقعے میسر آسکیں۔

سپیکر شاہ غلام قادر کی صدارت میں بدھ کے روز آزادجموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی کے اجلاس میں ممبر اسمبلی محمد صغیر خان کے توجہ طلب نوٹس کے جواب میں آزاد کشمیر کے وزیر صحت ڈاکٹر محمد نجیب نقی خان نے کہا کہ بیرون ملک سے آنے والے افراد کو قرنطینہ میں رکھنے کے لیے ایس او پیز وفاقی سطح پر بنائی جاتی ہے اور اس پر آزاد کشمیر میں بھی عملدرآمد کیا جارہا ہے۔ لیکن ایس او پی میں ترمیم کی گئی ہے جو بھی افراد بیرون ملک سے آئے ہیں انہیں 24گھنٹے قرنطینہ سنٹرز میں رکھ کر صوبوں کے حوالہ کر دیا جاتا ہے۔ حکومت آزادکشمیرنے تمام انٹری پوائنٹس پر بیرون ملک سے آنے والے افراد کیلئے فارن ڈیسک قائم کر دئیے ہیں تاکہ ان کے لئے سہولیات میسر آسکیں۔ ممبر اسمبلی پیر علی رضا بخاری کے سوال کے جواب میں ڈاکٹر نجیب نقی نے کہا کہ ریاستی اخبارات کے بقایہ جات کی ادائیگی کو یقینی بنایا جارہا ہے اور ریاستی اخبارات کی یکمشت ادائیگی ممکن نہ ہوئی تو عید پرریاستی اخبارات کو ادائیگیاں عمل میں لائیں گی۔

آزادجموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی کے بدھ کے روز منعقدہ اجلاس میں ممبر اسمبلی محمد صغیر خان کے سوال کے جواب میں سینئر وزیر چوہدر ی طارق فاروق نے کہاکہ پوری ریاست میں واٹر سپلائی سکیموں پر کام کررہے ہیں۔ اس حوالہ سے ماضی میں غلط اقدامات اٹھائے گئے جس سے نقصان ہوا۔ وزیر اعظم آزادکشمیر کی ہدایت پر آزادکشمیر بھر میں پینے کے صاف پانی کی فراہمی کیلئے ترجیحی بنیادو ں پر اقدامات کررہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ واٹر سپلائی سکیم تھوراڑ مورخہ22-03-2018کو 184.953ملین روپے کی لاگت سے منظور شدہ ہے۔ ابتدائی سروے میں شامل علاقوں میں سے کسی کو نکالا نہیں گیا۔البتہ ابتدائی سکیم میں جو علاقے نظر انداز ہو ئے تھے ان کو بھی سکیم میں شامل کرنے کی کاررائی کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ورک آرڈر کی کل مالیت157.447ملین روپے ہے جبکہ ٹھیکیدار کو اس وقت تک71.544ملین روپے کی ادائیگی ہو چکی ہے۔ مین سورس پر Weirکا کام شروع ہو گیا ہے جبکہ ڈسٹری بیوشن ٹینک میں سے50ہزار اور دس ہزار گیلن ٹینکس مکمل ہو چکے ہیں جبکہ30ہزار گیلن ٹینک پر کام شروع ہے۔

سپیکر شاہ غلام قادر کی زیر صدار ت بدھ کے روز منعقدہ آزادجموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی کے اجلاس میں ممبر اسمبلی پیر سید علی رضا بخاری نے حال ہی میں بلوچستان میں دہشتگردی سے شہید ہونے والے پاک فوج کے آفیسر وجوانوں، شہداء افواج پاکستان، شہداء تحریک آزادی کشمیر کیلئے فاتحہ خوانی بھی کروائی۔اس موقع سابق امیدوار اسمبلی و مسلم لیگ ن کے رہنما راجہ افتخا ر ایوب کی صحت یابی کیلئے بھی دعا کی گئی۔ سپیکر شاہ غلام قادر کی زیر صدار ت بدھ کے روز منعقدہ آزادجموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی کے اجلاس میں ایوان نے ممبرا ن اسمبلی سید شوکت علی شاہ، سردار فاروق سکندر،راجہ جاوید اقبال اور عامر غفار لون کی کی رخصت کی درخواستیں اتفاق رائے سے منظور کر لیں۔ سپیکر شاہ غلام قادر نے آزادجموں وکشمیر قانون سا ز اسمبلی کا اجلاس جمعرات کی صبح10بجے تک ملتوی کر دیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں