موجودہ حکومت نے قبیلائی ازم کی انتہاء کردی ہے،اپوزیشن لیڈر

مظفرآباد( سٹاف رپورٹر/سٹیٹ ویوز) آزادکشمیر قانون ساز اسمبلی میں قائد حزب اختلاف چوہدری محمد یاسین نے کہا ہے کہ وفاق سے ملنے والے 78کروڑ کے فوڈ پیکیج کی تقسیم کے لیے تمام سیاسی ودینی جماعتوں کے کارکنوں پر مشتمل وارڈ یونین کونسل کی سطح پر کمیٹیاں تشکیل دی جائیں تاکہ حقداروں تک حق پہنچ سکے اور یہ خطیر رقم سیاسی رشوت کے طورپر استعمال نہ ہوسکے.

کیونکہ موجودہ حکومت نے تقرریوں،تبادلوں سے لے کر اہم اداروں تک اقرباء پروری اور قبیلائی ازم کی انتہا کردی ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعرات کے روز صحافیوں سےگفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ۔حکمرانوں میں خوف خدا ختم ہوچکا ہے ان سے انصاف کی توقع نہیں کی جاسکتی اس لیے 78کروڑ روپے کے فوڈ پیکیج کے لیے کمیٹیاں بنائی جائیں جن میں تمام سیاسی،مذہبی جماعتوں کے کارکن شامل ہوں اور اس سارے عمل کی نگرانی میڈیا کرے .

کیونکہ کرونا کے دوران کرونا سے بچاؤ کے لیے الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا نے عوامی آگاہی کے لیے بھرپور مہم چلائی اور دیہاڑی دار متاثرین کی عملی مدد بھی کی اس لیے میڈیا کی نگرانی میں فوڈ پیکیج کی تقسیم یقینی بنائی جائے۔چوہدری محمد یاسین نے کہا کہ حکمرانوں نے آزادکشمیر میں جو ماحول بنارکھا ہے اس ماحول میں اس بات کے خدشات موجود ہیں کہ وزیراعظم کمیونٹی انفراسٹریکچر پروگرام کی طرح فوڈ پیکیج کی تقسم بھی ٹھکانے لگادی جائے۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کی جانب سے والدین کو سکولوں کی فیسیں جمع کروانے کا حکم دینا افسوسناک ہے یہ تو شاہی حکم جاری ہورہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ حکومت طلباء وطالبات کی تین ماہ کی فیسیں قومی خزانے سے جمع کروائے ویسے بھی اس وقت اللہ پاک کاخوف کرلیں حالات کو دیکھیں اور اپنے احکامات دیکھیں،کرونا تو ایک آزمائش تھی لیکن حکمران اللہ کے عذاب کو دعوت دے رہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں