مقبوضہ کشمیرکی صورتحال پر اوآئی سی کاخصوصی اجلاس طلب کروانے کامطالبہ،پیر علی رضا بخاری کی قانون سازاسمبلی میں قرارداد

مظفرآباد(سٹیٹ ویوز) ممبر آزاد جموں و کشمیر قانون ساز اسمبلی و سجادہ نشین درگاہ بساہاں شریف پیر سید علی رضا بخاری نے مقبوضہ کشمیر کے ہندوستانی فوجی محاصرے کا ایک سال مکمل ہونے پر آزاد کشمیر اسمبلی کے پانچ اگست کو منعقد ہونے والے اجلاس کے لئے سپیشل قرارداد جمع کراتے ہوئے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر کی غیر معمولی صورتحال پر او آئی سی کا خصوصی سربراہ اجلاس طلب کروائے۔ وزیر اعظم پاکستان عمران خان ، وزیراعظم ازادکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان کو کشمیر پر او آئی سی کے خصوصی اجلاس سے خطاب کی دعوت دیں ۔

قرارداد میں یہ مطالبہ بھی کیا گیا کہ او آئی سی کے خصوصی اجلاس میں مقبوضہ کشمیر کی موجودہ صورتحال ، کشمیری عوام پر ظلم و ستم ، انسانی حقوق کی خلاف ورزی اور دفعہ 370 اور 35 اے کی منسوخی کے بارے میں تبادلہ خیال کیا جائے۔ مزید برآں ہندوستانی فوج کی طرف سے آزاد جموں و کشمیر میں ایل او سی کی خلاف ورزیوں اور شہری اموات کو بھی زیر غور لایا جائے۔

وزیر اعظم پاکستان ،آزادجموں و کشمیر کے وزیراعظم کو او آئی سی سربراہ کانفرنس سے خطاب کرنے کے لئے دعوت دیں جس میں وہ تصویروں ، ویڈیوز ، نیوز کلپنگ وغیرہ کیساتھ تفصیلی شواہد کے ساتھ او آئی سی سربراہان سے کشمیریوں کے حق خود ارادیت کے حق میں حمایت حاصل کرنے کی کوشش کریں قرارداد میں یہ مطالبہ بھی کیا گیا کہ امت مسلمہ سے کہا جائے کہ وہ ہندوستان کے ساتھ تمام سفارتی اور تجارتی تعلقات کو ختم کرے یا کم از کم ہندوستان پر اتنا دباؤ ضرور ڈلوایا جائے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں ہلاکتوں اور عصمت دری کے واقعات کو کم سے کم کرے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں