دارلحکومت مظفرآباد سمیت دنیا بھر میں آج بھارتی یوم جمہویہ یوم سیاۃ کے طور پر منایا گیا

مظفرآباد(سٹیٹ ویوز)بھارت کے نام نہاد یوم جمہوریہ کو ریاست جموں وکشمیر کے دونوں اطراف یوم سیاہ کے طو رپر منایا گیا۔ اس سلسلہ میں آزاد جموں وکشمیر کے تمام چھوٹے بڑے شہروں میں احتجاجی ریلیاں اور احتجاجی جلسے جلوسوں کا انعقاد کیا گیا۔یوم سیاہ کے حوالہ سے سب سے بڑی احتجاجی ریلی آزادجموں وکشمیر کے دارلحکومت مظفرآباد میں نکالی گئی جو اولڈ سیکرٹریٹ سے شروع ہوئی اور علمدار چوک پہنچ کر اختتام پذیر ہوئی۔

احتجاجی ریلی میں سیاسی و سماجی رہنماء، مہاجرین تنظیموں کے نمائندگان، سیکرٹریز حکومت، سربراہان محکمہ جات، تاجر وں، ملازمین تنظیموں، وکلاء اور سول سوسائٹی نے شرکت کی۔ احتجاجی ریلی کے شرکاء نے مقبوضہ کشمیر میں ہندوستانی فوج کے مظالم کے خلاف اور مقبوضہ جموں وکشمیر کے عوام کے حق خودارادیت کے حق میں بینرز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے ریلی کے شرکاء ہندوستان کے مقبوضہ کشمیر پر قبضہ کے خلاف نعرے بازی کر تے رہے۔

جن میں مقبوضہ جموں وکشمیر کے مظلوم و محکوم عوام کو ان کا بنیادی حق حق خودارادیت دینے کا مطالبہ کیا گیا تھا۔ احتجاجی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر کے عوام اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق اپنے بین الاقوامی طور پر تسلیم شدہ حق کیلئے جدوجہد کررہے ہیں۔ ہندوستان نے گزشتہ سات دھائیوں سے مقبوضہ کشمیر کے عوام پر ظلم و جبر کی انتہاء کر دی ہے۔

ہندوستان جمہوریت کا ڈھونگ رچا کر دنیا کی آنکھوں میں دھول جھونک رہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہندوستان نے 5اگست2019کے بعد مقبوضہ کشمیر کے عوام کو فوجی محاصرے میں رکھا ہوا ہے۔ریلی کے شرکاء نے مطالبہ کیا کہ اقوام متحدہ مقبوضہ کشمیر میں ہندوستانی مظالم بند کروائے اورسیکورٹی کونسل کی قراردادوں پر عملدرآمد کروائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں