کمسن بچی کو قتل کرنیوالے 4 مجرموں کو ریلیف ، پھانسی عمرقید میں تبدیل

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک)سندھ ہائی کورٹ نے کم عمر بچی کو زیادتی کے بعد قتل کرنے والے 4 مجرمان کی پھانسی کی سزا ختم کردی ہے۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق سندھ ہائی کورٹ کےجسٹس کے کے آغا اور جسٹس عبدالمبین لاکھو پر مشتمل 2 رکنی بینچ نے زیادتی کے بعد بچی کو قتل کرنے والے مجرمان کی سزا کے خلاف اپیل پر سماعت کی۔

سماعت کے بعد عدالت نے فیصلہ سناتےہوئے مجرمان کی جانب سے سزا کو کالعدم قرار دینے کی درخواست مسترد کرتے ہوئے پھانسی کی سزا کو ٹیکنیکل بنیاد پر عمر قید میں تبدیل کردیا ہے۔

عدالت کا کہنا تھا کہ مجرمان کے خلاف ثبوت موجود ہیں، جرم ثابت ہوچکے ہیں لہذا حیدر شاہ، عارف شاہ، الطاف حسین اور شاہد محمود کی سزا کالعدم قرار نہیں دی جاسکتی، تاہم سزا کو ٹیکنیکل بنیادوں پر عمر قید میں تبدیل کررہے ہیں۔

واضح رہے کہ 2018 میں کراچی کے علاقے سچل گوٹھ تھانے میں ان چاروں ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کروایا گیا تھا کہ انہوں نے 8 سالہ کائنات کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد موت کے گھاٹ اتار دیا ۔

مقدمہ ٹرائل کورٹ میں چلا2019 کو عدالت نے جرم ثابت ہونے کے بعد چاروں مجرمان کو موت کی سزا سنادی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں