شاہ نواز علی شیرایڈووکیٹ کی گرفتاری ، جموں وکشمیر عوامی ورکرز کا فوری رہائی کا مطالبہ

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) جموں کشمیر عوامی ورکرز کے چیرپرسن نثار شاہ ایڈووکیٹ نے پارٹی کے مرکزی رہنما شاہ نواز علی شیرایڈووکیٹ کی نکیال انتظامیہ کی طرف سے غیر قانونی اور بے بنیاد گرفتاری کی بھرپور مذمت کرتے ہوئے انکی فوری رہائی کا مطالبہ کیا ہے۔

نثار شاہ ایڈووکیٹ نے انکی گرفتاری کے فوری بعد منعقد کی جانے والی ہنگامی پریس کانفرنس کے موقع پر کہا ہے کہ نکیال انتظامیہ خصوصا وہاں کا اسسٹنٹ کمشنر عمر فارق اپنی کرپشن چھپانے کیلیے بے گناہ شخص کے خلاف جھوٹا مقدمہ کر کے اسےحراساں کر رہے ہیں جو تمام قانونی اور اخلاقی روایات کے برعکس اقدام ہے۔

انسانی و سیاسی حقوق کیلیے جہدوجہد کرنے والے ایک باشعور شخص کو اسطرح پھنسانے والے کمشنر پبلک ٹیکسز سے تنخواہ لیتے ہیں اور وہ عوامی مسائل میں عوام کے سامنے جوابدہ ہیں۔لوگوں کے سوالات کا جواب دینے اور انکے مسا ئل کو حل کرنے کے بجاے انھیں راستے سے ہٹانے کی پالیسی پر عمل ہورہا ہے۔

انھوں نے کہا کہ شاہ نواز علی شیر کا جرم یہی ہے کہ اس نے عوامی حقوق کے تحفظ کیلیے جہدوجہد کرنے کا عہد کر رکھا ہے جسے وہ بخوبی انجام دے رہے۔ یہی بات ہے کہ کمشنرہ نکیال اسے اپنا دشمن سمجھتے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ جھوٹے مقدمات کے ذریعے نکیال کے مظلوم عوام کے حقوق کی آواز کو دبایا نہیں جا سکتا۔

ہم ایسے لوگوں کو بے نقاب کریں گے جو مظلوم عوام کے حقوق غصب کر رہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں