جاتے جاتے فاروق حیدر حکومت باریک کام کرگئی، راولاکوٹ ڈسٹرکٹ ہسپتال کا 55 ملین روپے کا فنڈ سدھنوتی منتقل

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر، سٹیٹ ویوز)آزادکشمیر میں مسلم لیگ نواز حکومت نے راولاکوٹ ڈسٹرکٹ ہسپتال کا 55 ملین روپے کا فنڈ سدھنوتی منتقل کر دیا۔ ڈسٹرکٹ ہسپتال راولاکوٹ کیلئے مالی سال 2020ء اور 2021ء کے لیے مختص 125 ملین روپے میں سے 55 ملین روپے کافنڈ محکمہ فزیکل پلاننگ اینڈ ہاوسنگ نے غیر قانونی طریقے سے سدھنوتی کے ڈسٹرکٹ ہسپتال کیلئے منتقل کردیا ہے۔

باغ میں دل کے ہسپتال کیلئے مختص 5 ملین روپے بھی سدھنوتی منتقل کر دیئے گئے۔رواں سال حکومت نے پونچھ میں ہجیرہ اور عباسپور کی واٹر سپلائی منصوبوں کے 30 ملین روپے بھی حویلی اور باغ منتقل کر دیئے تھے۔

ذرائع کے مطابق حکومت نے یہ فنڈز جون میں فنڈز لیپس ہونے کا بہانہ بنا کر منتقل کیے ہیں تاہم ذمہ دار ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومت نے جان بوجھ کر اس منصوبے کی جلد تعمیر پر توجہ نہیں دی بلکہ سازش کے تحت سست رفتاری سے کام کرایا جارہا ہے جبکہ یہ فنڈز لیپس نہیں ہورہے تھے بلکہ 40 ملین روپے ڈسٹرکٹ ہسپتال راولاکوٹ کے منصوبے میں ماہ جون میں ہی خرچ ہو جاتے جبکہ 15 ملین روپے ضلع کے اندر کسی دوسری اسکیم کو دیئے جا سکتے تھے

تاہم حکومت نے جان بوجھ کر یہ فنڈز دوسرے ضلع میں منتقل کیے ہیں جو پونچھ کے لوگوں کے ساتھ زیادتی ہے۔ ماہرین کے مطابق ڈسٹرکٹ ہسپتال راولاکوٹ کے فنڈز اگر لیپس ہونے کا واقعی خطرہ موجود تھا تو حکومت اس فنڈ کو عباسپور، ہجیرہ یا تھوراڑ کے جاری منصوبوں میں سے کسی پر خرچ کر سکتی تھی۔

اس حوالے سے محکمہ فزیکل پلاننگ اینڈ ہاوسنگ سیکرٹریٹ کے ذمہ داران سے موقف لیا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ راولاکوٹ ڈسٹرکٹ ہسپتال کے یہ فنڈز جون میں خرچ نہیں ہوسکتے تھے اس لیے سدھنوتی کے جاری منصوبے کو 50 ملین روپے، بیٹھک اعوان آباد کے آر ایچ سی کیلئے 5 ملین اور تھوراڑ آر ایچ سی کیلئے 5 ملین روپے منقتل کیے گئے ہیں تاہم جب ان سے یہ پوچھا گیا کہ فنڈز منتقلی کے حوالے سے قانونی ضرورت پوری کرتے ہوئے ضلع پونچھ کے ایکسئین سے رضامندی کیوں نہیں لی گئی اور پونچھ کے اندر ہی کسی اور منصوبے کو فنڈز کیوں نہ دیئے گئے تو محکمہ کے ذمہ داران کے پاس اس کا کوئی جواب نہیں تھا۔

دوسری جانب متحدہ محاذ چک جو عوامی سطح پر اس منصوبے کا اصل سٹیک ہولڈر ہے نے ہسپتال کے فنڈز منتقلی کو ن لیگی حکومت کی پونچھ دشمنی قرار دیتے ہوئے ایک مرتبہ پھر احتجاجی تحریک شروع کرنے کا اعلان کیا ہے۔ متحدہ محاذ چک دھمنی کے ترجمان نے کہا کہ ہسپتال کیلئے ہم نے گزشتہ 16 سال میں بھرپور تحریکیں چلائیں ہیں، اس حوالے سے متحدہ محاذ کا ہنگامی اجلاس جل ہی کر کے اگلا لائحہ عمل دیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں