خطے میں نئی جنگ کا آغاز،بھارت اورمغربی ایجنسیاں پاکستان کو نشانہ بنانے کیلئے ہیں تیار، فیصل محمد

لندن ( مانیٹرنگ نیوز ) افغانستان کی موجودہ صورتحال خطہ میں نئی جنگوں کا باعث ہوگی تاہم یہ جنگیں عموما سائبر وار فیئر اور پراکسیز کے ذریعے لڑیں جائیں گی..

ان خیالات کا اظہار عالمی عالمی تجزیہ نگار فیصل محمد نے نیوز عرب سے گفتگو کے دوران کہی انھوں نے کہا کہ افغانستان کی موجودہ صورتحال کے دوران پاکستان کی جانب سے اپنی خارجہ پالیسی کا رخ مغرب سے چین کی طرف کرنے پر امریکہ نے افغانستان کے ساتھ پاکستان کو بھی غیر یقینی صورتحال سے دوچار کرنے کافیصلہ کرلیا تھا اور اس پس منظر میں وہ اپنےعلاقی حلیف بھارت کی خفیہ ایجنسی RAW کے تعاون سے پاکستان میں پراکسیز شروع کرچکا ہے

انھوں نے کہا کہ داسو ڈیم پراجیکٹ میں بھی RAW اور CIA کی منصوبہ بندی تھی جس کے بارے میں انھوں خبردار کردیا تھا تاہم حکومت پاکستان نے مصلحت کی وجہ سے اس کی پردہ پوشی کی تاہم گزشتہ دنوں پاکستانی خفیہ ایجنسی ISI کے دورہ چین کے دوران چین نے مزید ثبوت فراہم کرکے پاکستان پر زور دیا کہ وہ امریکہ کو واضح کردے کہ بھارت اور امریکی پراکسیز کو چین برداشت نہیں کرے گا..

اسی لیئے پاکستان کے سیکورٹی ایڈوائزر معید یوسف جو پہلے ہی مغربی مفادات کی نگرانی کرتے ہیں مجبورا ISI جنرل فیض کے ہمراہ امریکہ گئے ہیں انھوں نے کہا امریکہ نے افغانستان کی بدلتی صورتحال پر بھارت کو ہدایت کی ہے کہ وہ افغانستان سے توجہ ہٹا کر اپنی بھر پور صلاحیتیں پاکستان اور چین کے خلاف ہی استعمال کریں اس حوالے سے سیکرٹری خارجہ بلنکن کا دورہ بھارت اہمیت کا حامل تھا

اپنا تبصرہ بھیجیں