نقطہ نظر/ کِرن عزیز کشمیری

نام نہاد جمہوریت

مودی سرکار کی نام نہاد سیاست نے بھارت کا دنیا میں ایسا چہرہ متعارف کروایا ہے جہاں اقلیتوں کی کوئی اہمیت نہیں بھارت ہندو اکثریت کا ملک کہلائے جانے لگا ہے اس سلسلے میں اہم امر یہ ہے کہ روشن خیال کہلانے والا ملک ایک جنونی سوچ کی بھینٹ چڑھ گیا ایک ایسی سوچ جس کی وجہ سے اقلیتیں بھارت میں بدترین زندگی گزارنے پر مجبور ہیں مودی سرکار کی پالیسی مسلمانوں کی اکثریت کو اقلیت میں تبدیل کرنا ہے واضح رہے کہ اقلیتوں کے تحفظ کے لیے بھارتی حکومت مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے اس ضمن میں یہ کہنا بے جا نہ ہوگا کہ بھارت مسلمانوں اور دیگر اقلیتوں کے لئے مکمل طور پر ایک غیر محفوظ ملک بن چکا ہے قابل غور امر یہ ہے کہ بھارت خطے میں بدامنی کو اپنے مفاد میں دیکھتا ہے امن نہیں بلکہ جنگ کا حامی ہے پاکستان کے ساتھ مذاکرات سے راہ فرار اختیار کرنے کے بعد بھارتی عزائم واضح ہیں پاک چین اقتصادی راہداری پر جہاں پوری دنیا کی نظریں ہیں بھارت اس سلسلے میں نہ صرف ناخوش ہے بلکہ بوکھلاہٹ کا شکار ہے اس سلسلے میں اہم امر یہ ہے کہ بھارتی پراپیگنڈہ مہم عروج پر ہے

بھارت کا مقصد ذلت و رسوائی ہے بھارتی ریاستی دہشت گردی کا شکار کوئی ایک قوم یا مذہب نہیں بلکہ پوری انسانیت نشانے پر ہے مودی سرکار نے بھارت کو عالمی طور پر پوری دنیا میں رسوا کرکے رکھ دیا ہے بھارت ہر قیمت پر اقلیتوں کا خاتمہ چاہتا ہے واضح رہے کہ بھارت کو افغانستان میں شرمندگی اٹھانی پڑی ہے بھارت کہ کشمیر میں کارنامے پوری دنیا کے سامنے عیاں ہو چکے ہیں بی جے پی کی موجودہ حکومت نے بھارت کے سیکولر چہرے کو بگاڑ کر رکھ دیا ہے

گزشتہ برس بھارت میں شہریت کے ایک نئے قانون کی منظوری دی تھی اس امر کے بعد اقلیتوں خصوصاّ مسلمانوں بھارتی ریاستوں میں رہنا مشکل ہو چکا ہے اس ضمن میں اہم امر یہ ہے کہ سکھ بھارتی پنجاب میں شدید مشکلات کا شکار ہیں مسلمانوں کا بھارتی زمین پر رہنا مشکل بنا دیا گیا ہے تو دیگر اقلیتوں کو بھی ریاستی جبر کا نشانہ بنایا جارہا ہے اس سلسلے میں مودی سرکار نے اپنے مذموم مقاصد کی تکمیل کے لیے میڈیا کا بھرپور استعمال کیا ہے ٹی وی چینل پر اینکر حضرات چیخ چیخ کر سچ کو جھوٹ اور جھوٹ کو سچ بنا کر عوام کو گمراہ کرنے کی پالیسی پر کامیابی سے عمل پیرا ہیں اہم امر یہ ہے کہ گزشتہ روز آسام میں گزشتہ ہفتے مسلمانوں کو کم کیمپوں میں منتقل کرنے کا آغاز کیا گیا بھارت کی موجودہ صورتحال یہ ہے کہ اس وقت بھارت میں 25 سے زائد آزادی کی تحریکیں چل رہی ہیں بھارت کو یہ امر یاد رکھنا چاہیے کہ کوئی بھی سازش یہ پروپیگنڈا پاکستان کا کچھ نہیں بگاڑ سکتا

مودی سرکار نے جبر کے زور پر انسانیت کی دھجیاں اڑائی ہیں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے باعث بھارت عالمی طور پر بدنامی کا باعث ہے پاکستان میں دہشت گردی کی سرپرستی اور سہولت کاری میں بھی بھارت نے اہم کردار ادا کیا ہے اس سلسلے میں قابل ذکر امر یہ ہے کہ پاکستان کے خلاف مودی سرکار کے پروپیگنڈا کا اصل مقصد بھارت کے داخلی معاملات سے توجہ ہٹانا ہے بھارت میں مسلمان خواتین اور بچے بھی محفوظ نہیں ہیں بھارت کا شہری ہونے کے باوجود مسلمانوں کو وہ مقام حاصل نہیں جس کے وہ حقدار ہیں اقلیتوں کے خلاف کارروائیاں جاری ہیں گھروں سے شہریوں کو بے دخل کر کے املاک کو آگ لگا دی جاتی ہے

آسام میں بھرتی کاروائیاں پوشیدہ نہیں بلکہ دہشتگردی کے ذریعے حالات کشیدہ کئے گئے تاکہ مسلمان اور دیگر اقلیتیں خوفزدہ ہوکر اپنے گھر چھوڑ دیں اس سلسلے میں قابل مذمت امر یہ ہے کہ بھارت میں کسانوں کو انصاف دینے کے بجائے ان کا قتل عام کیا گیا اس سلسلے میں فسادات میں 9 افراد ہلاک ہو چکے ہیں اس معاملے میں بھارتی سا کھ کی دھجیاں اڑا دی ہیں یہ امر واضح ہے کہ بھارت مقبوضہ وادی سے دنیا کی توجہ ہٹانے کے لیے پاکستان سے چھیڑ چھاڑ کے حربے آزماتا ہے

تاہم مودی سرکار کی ناکام پالیسی کے تحت بھارت داخلی انتشار کا شکار ہے اس حوالے سے بھارت کے لیے یہ مثال کافی ہے کہ کشتی با ہر کے پانی سے نہیں ڈوبتی بلکہ اندر پانی بھر جانے سے ڈوب جاتی ہے جھوٹ بولنا بھارت کی ریاستی پالیسی کی بنیاد ہے پاکستان کے خلاف بھارت کا جھوٹ بے نقاب ہو چکا ہے مودی سرکار کو اب شاید دوبارہ اقتدار میں آنے کا موقع نہ ملے ان کے دور اقتدار میں عوام مسائل کے دلدل سے نہ نکل سکی غربت کے شکنجے میں جکڑی ہوئی بھارتی عوام انتہائی مایوس ہے دہشت گردی اور غنڈہ گردی نے پورے بھارت کو تباہی کے دہانے پر لا کھڑا کیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں