آزاد کشمیر: کھربوں کی کرپشن : 100 سے زائد سیاستدانوں،بیوروکریٹس اور کاروباری شخصیات کو ہتھکڑیاں لگنے کا امکان، فہرستیں تیار

اسلام آباد(رپورٹ:محمد نوید چوھدری) پاکستان میں کرپٹ عناصر کیخلاف احتسابی عمل کے بعد آزاد کشمیر بھر میں بھی متعدد بیوروکریٹس، کاروباری شخصیات کیخلاف شکنجہ سخت کرنے کا عمل تیز ہونے جا رہا ہے جس سے تقریبا 100 سے زاٸد موجودہ اورسابق حکومتی شخصیات سمیت بیوروکریٹس اور کاروباری شخصیات کو ہتھکڑیاں لگنے کے امکانات بڑھ گئے ہیں۔
تفصیلات کےمطابق پاکستان میں احتسابی عمل کے بعد آزاد کشمیر میں بھی کرپٹ عناصر کے خلاف کاروائی کی تیاریاں شروع ہو گٸ ہیں۔ وزیراعظم پاکستان عمران خان کی کرپشن کے خاتمے کے حوالے سے پالیسی پرعمل پیرا ہونے کے لیے آزاد کشمیر میں کرپٹ عناصر کے احتساب کے لیے ہدایات جاری کر دی گئی ہیں۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ آٸندہ دنوں میں ایک شفاف تحقیقاتی کمیشن بنایا جائیگا جس کے ممبران میں حاضر سروس اور ریٹائرڈ بیوروکریٹس سمیت کئی معزز جج بھی شامل ہوں گے۔

ذرائع کے مطابق تقریبا 100 سے زائد ناموں کی فہرست تیار ہو چکی ہے جس میں موجودہ اور سابقہ حکومتوں کے وزراء اور دیگر عہدیداروں سمیت بیورکرٹس اور بڑے کاروباری نام شامل ہیں جن کے بارے میں کہا جارہا ہے کہ کم و بیش دو کھرب سے زاٸد کی کرپشن کی ہے جس میں منی لانڈرنگ’ سرکاری زمینوں کے گھپلے سمیت بے نامی جائیدادیں شامل ہیں۔

اطلاعات کے مطابق اس پیش رفت کے بعد آزاد کشمیر کی سیاست میں ہلچل مچ جائیگی۔ بہت سے کرپٹ عاصر ماضی کی طرح ملک سے فرار ہونے کی کوشش میں مصروف عمل ہیں۔

تفصیلات کےمطابق پاکستان میں احتسابی عمل کے بعد آزاد کشمیر میں بھی کرپٹ عناصر کے خلاف کاروائی کی تیاریاں شروع ہو گئی ہیں۔ وزیراعظم پاکستان عمران خان کی کرپشن کے خاتمے کے حوالے سے پالیسی پرعمل پیرا ہونے کے لیے آزاد کشمیر میں کرپٹ عناصر کے احتساب کے لیے ہدایات جاری کر دی گئی ہیں۔ ذرائع کے مطابق آئندہ دنوں میں ایک شفاف تحقیقاتی کمیشن بنانے کے امکانات موجود ہیں جس کے ممبران میں حاضر سروس اور ریٹائرڈ بیروکریٹس سمیت کئی معزز جج صاحبان بھی شامل ہوں گے۔

ذرائع کے مطابق تقریبا 100 سے زائد ناموں کی فہرست تیار ہو چکی ہے جس میں موجودہ اور سابقہ حکومتوں کے وزراء اور دیگر عہدیداروں سمیت بیورکرٹس اور بڑے کاروباری نام شامل ہیں ‘جنھوں نے کم و بیش دو کھرب سے زائد کی کرپشن کی ہے’جس میں منی لانڈرنگ’ سرکاری زمینوں کے گھپلے سمیت بے نامی جائیدادیں شامل ہیں۔ اطلاعات کے مطابق اس پیش رفت کے بعد آزاد کشمیر کی سیاست میں ہلچل ہونے کے امکانات بڑھ گئے ہیں اور بہت سے کرپٹ عاصر ماضی کی طرح ملک سے فرار ہونے کی کوشش میں مصروف عمل ہیں۔
حکومت کو کرپشن , بد عنوانی ,روکنے والے ادارے مضبوط اور ان اداروں کی کارکردگی میں سیاسی مداخلت کو سختی سے روکنے کی ضرورت،احتساب کا موثر نظام رائج کیا جا ئے جس کے تحت ہر شخص اور ادارہ جوابدہ ہو۔

اپنا تبصرہ بھیجیں