صحافی خاد م آفریدی کی گمشدگی کیخلاف صحافتی وسیاسی قیادت کا سخت ردعمل سامنے آگیا

خیبر(ہجرت علی آفریدی ،سٹیٹ ویوز) صحافی خاد م آفریدی کو فوری رہا کیا جائے . ضلع خیبر کے صحافیوں کا باب خیبر پر احتجاج. قبائلی ضلع خیبر کے صحافیوں کا سی ٹی ڈی کی جانب سے اٹھائے جانے والے صحافی خادم آفریدی کی رہائی کیلئے احتجاجی مظاہرہ .صحافیوں کا تمام سرکاری اور منتخب نمائندگان کے تقریبات سے بائیکاٹ کا اعلان.

ضلع خیبر کے تینوں پریس کلبوں کے صحافیوں نے جمرود باب خیبر کے مقام پر احتجاجی مظاہرہ کیا.احتجاج کرنے والے صحافیوں نے صحافی خادم خان آفریدی کی فوری طور پر رہا کرنے اور واقعے کی آزادانہ تحقیقات کرنے کا مطالبہ کیا .

جمرود باب خیبر کے مقام پر احتجاجی مظاہرے میں جمعیت علمائے اسلام پاکستان کے تحصیل باڑہ کے تحصیل چیئرمین مفتی کفیل، سید کبیر آفریدی،سماجی شخصیت شاکر آفریدی،خیبر یونین کے زاہد اللہ ، پی ٹی ایم کے عہدیداران نے بھی شرکت کی صحافیوں نے جمرود پریس کلب سے باب خیبر تک ہاتھوں میں پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے. جن پر سی ٹی ڈی و ڈی پی او مردہ باد کے نعرے درج تھے .

صحافیوں نے حکومتی اداروں سے مطالبہ کیا کہ صحافی خادم خان آفریدی کو فوری طور پر رہا کیا جائے جبکہ اس واقعے کی آزادانہ تحقیقات کے لئے عدالتی کمیشن بنایا جائے اور اس میں ملوث تمام اہلکاروں کو نشان عبرت بنایا جائے .ساتھ ہی اس واقعے پر صحافتی حلقوں سے معافی مانگی جائے.صحافیوں کیساتھ اس طرح کا رویہ ناقابل برداشت ہے، اگر واقعے کی فوری انکوائری نہیں کی تو احتجاج کا یہ سلسلہ صوبائی اسمبلی اور نیشنل پریس کلب اسلام آباد تک بڑھائیں گے.

اپنا تبصرہ بھیجیں