بلدیاتی الیکشن پر تمام سیاسی جماعتوں کا متفق ہونا ضروری، جلد انتخابات کرا کے اختیارات نچلی سطح پر منتقل کریں گے.وزیراعظم سردار تنویر الیاس خان کا قانون ساز اسمبلی میں خطاب

مظفرآباد(پی آئی ڈی)15ویں آئینی ترمیم کے مسودہ پر بحث میں حصہ لیتے ہوئے وزیر اعظم آزادکشمیر سردار تنویر الیاس خان نے کہا کہ آزادکشمیر میں جلد ازجلد بلدیاتی انتخابات کروائے جائیں گے تاکہ اقتدار نچلی سطح تک منتقل ہو سکے اور بلدیاتی ادارے بھی فعال ہونگے۔ وزیراعظم نے کہا کہ اس کے علاوہ ہم آزادکشمیر میں نمبر داری نظام بھی بحال کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حلقہ بندیوں اور انتخابی فہرستوں کے معاملات کو بھی یکسو کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ بلدیاتی الیکشن کے انعقاد کے سلسلہ میں تمام سیاسی جماعتوں کا متفق ہونا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈویژنل، ضلعی اور تحصیل سطح پر پارلیمانی بورڈز تشکیل دیے جائیں گے۔ علاوہ ازیں دیگر تمام ضروری اقدامات کے بعد بلدیاتی الیکشن کے انعقاد کے لیے تمام ممکنہ اقدامات کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آزاد کشمیر میں شفاف، غیر جانبدارانہ انتخابات کے انعقاد کے لیے حکومتی ترجیحی بنیادوں پر اقدامات کر رہے ہیں۔ وزیر اعظم آزادکشمیر نے کہا کہ مہاجرین کے گزارہ الاؤنس میں 1500فی کس اضافے پر عملدرآمد کر دیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت سے تنخواہوں اور پنشن میں اضافے کے لیے درکار فنڈز کے حصول کے لیے وزارت خزانہ کو پراسیس تیز کرنے کی اور پنشن اور تنخواہ میں اضافے کی ہدایات جاری کر دی ہیں۔ وزیر اعظم نے کہا کہ ہمیں یقین ہے کہ وفاقی حکومت ملازمین کی تنخواہ اور پنشن میں اضافہ کی مدمیں حائل رکاوٹیں دور کرے گی۔ وزیر اعظم نے کہا کہ آزاد کشمیر کی تمام مساجد کو مفت بجلی کی فراہمی پر عملدرآمد شروع ہو گیا ہے۔ انہو ں نے کہا کہ فیول ایڈجسٹمنٹ کی مدمیں 7ارب روپے گزشتہ دور سے بقایا جات چلے آرہے ہیں۔ وزیراعظم آزادکشمیر نے کہا کہ آزادکشمیر میں بجلی کے صارفین پر فیول ایڈجسٹمنٹ اور دیگر ٹیکسز کی مد میں بوجھ نہیں پڑنے دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ میر پور منگلا متاثرین کے مسائل کے معاملے میں چیئرمین واپڈا کو جوابدہ بنانے کے لیے ایوان کی کمیٹی بنائی جائے۔

انہوں نے کہا کہ آزادکشمیر میں بجلی کے صارفین کو تمام ممکنہ سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنایا جارہا ہے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ متاثرین منگلا نے اپنے اباواجداد کی قبروں کی قربانیاں دی ہیں ان کے مسائل کے لیے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات کر رہے ہیں۔ وزیر اعظم آزادکشمیر نے کہا کہ آزادکشمیر میں جہاں بھی بجلی پیدا ہوتی ہے وہاں کے لوگوں کو بھی سہولیات دینے کے لیے اقدامات کر رہے ہیں۔وزیراعظم آزادکشمیر نے کہا کہ مہاجرین کے گذارہ الاؤنس میں 1500 فی کس کے اضافے پر عملدرامد کردیا گیا ہے

۔سرکاری ملازمین کی پنشن اور تنخواہوں میں اضافے پر عملدرامد کی ہدایت کردی ہے۔وفاقی حکومت سے تنخواہوں اور پنشن کے لئے درکار فنڈز کے حصول کے لئے وزارت خزانہ کو پراسس تیز کرنے کی ہدایت کی ہے۔یقین ہے کہ وفاقی حکومت تنخواہوں اور پنشن کی مد میں حائل رکاوٹیں دور کرے گی۔مساجد کو مفت بجلی کی فراہمی پر عملدرآمد شروع ہو گیا ہے۔فیول کی مد میں 7 ارب روپے پچھلی حکومت کے دور سے بقایا جات چلے آ رہے ہیں۔بجلی کے صارفین پر فیول ایڈجسٹمنٹ اور دیگر ٹیکسیز کی مد میں بوجھ نہیں پڑنے دیں گے۔وزیراعظم آزادکشمیر نے کہا کہ چیئرمین واپڈا کو نیلم۔جہلم اور منگلا متاثرین کے مسائل کے معاملے میں جوابدہ بنانے کے لئے ایوان کی کمیٹی بنائی جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں