مسلم لیگ ن آزادکشمیر کے سیکرٹری جنرل نے پی ٹی آئی حکومت کے خلاف عدم اعتماد لانے کی مخالفت کردی

اسلام آباد(بیورورپورٹ)پاکستان مسلم لیگ نواز آزادکشمیر چیپٹر کے سیکرٹری جنرل چوہدری طاروق فاروق نے پی ٹی آئی حکومت کے خلاف متحدہ اپوزیشن کی طرف سے عدم اعتماد پیش کرنے کی مخالفت کر دی۔ طاروق فاروق کے اس بیان کے بعد آزادکشمیر میں عدم اعتماد کی افواہیں پھیلانے والوں کو مزید مایوسی ہوئی ہے۔

چوہدری طارق فاروق نے سماجی رابطے کی اپیلی کیشن ٹویٹر پر اظہار خیال کرتے ہوئے لکھا کہ میری ذاتی رائے میں آزاد جموں کشمیر کی متحدہ پارلیمانی اپوزیشن کو پاکستان میں مرکزی اور صوبائی سطح پر وقوع پزیر ھونے والی سیاسی ، انتظامی ، معاشی اور معاشرتی تبدیلیوں سے سبق سیکھنا چاہیے۔پی ٹی آئی آزاد کشمیر کی موجود حکومت کو اپنے حال پر چھوڑ دیں۔ یہ اپنے بوجھ تلے خود آجائیں گے۔

یاد رہے کہ چند روز قبل اسلام آباد میں اپوزیشن جماعتوں کے اراکین اسمبلی اور رہنماوں کی ایک بیٹھک ہوئی تھی جس کے بعد پیپلز پارٹی آزادکشمیر کے سیکرٹری اطلاعات و رکن اسمبلی سردار جاوید ایوب نے میڈیا کو بتایا تھا کہ اپوزیشن اتحاد حکومت کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک لانے پر تیار ہے اور اس حوالے سے حکمت عملی ترتیب دیدی گئی ہے، اس بیٹھک میں پیپلز پارٹی آزادکشمیر کے صدر چوہدری محمد یٰسین اور مسلم لیگ ن آزادکشمیر کے صدر شاہد غلام قادر شریک نہیں ہوئے تھے،

دونوں پارٹی رہنماوں کی عدم شرکت کی وجہ سے اس اجلاس کے بعد حکومت کے خلاف عدم اعتماد لانے جانے کا بیانیہ اپنی اہمیت کھو چکا تھا اور اب مسلم لیگ ن کے سیکرٹری جنرل کی طرف سے عدم اعتماد کی مخالفت کرنے کے بعد عدم اعتماد کی کوششوں کو مزید دھچکا لگا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں