پاکستانی وفد کا دورہ اسرائیل ، صدر اسحاق ہرزوگ سے ملاقات کی تصویر جاری،دفتر خارجہ کی تردید

اسلام آباد (سید فیصل علی) ستمبر کے تیسرے ہفتے میں پاکستانی شہریوں کے ایک وفد نے امن کے فروغ بین المذاھب ہم آہنگی اور پاک اسرائیل عوامی سطح پر تعلقات کی بحالی کے عنوان سے اسرائیل کے دورے کا آغاز کیا تھا جس دوران ان شہریوں کو اسرائیل کے تاریخی مقامات سمیت ہم مذہبی سیاسی و سماجی رہنماؤں سے ملاقاتیں کروائی گئیں ہیں

ذرائع کے مطابق اسرائیل اور عرب ریاستوں کے درمیان تعلقات کی بحالی اور عوامی رابطوں پر کام کرنے والی متحدہ عرب امارات کی نامور غیر سرکاری تنظیم شراکاہ نے اس دورے کے انتظامات کیے تھے،

اس دورے کے شرکاء میں دوہری شہریت رکھنے والے امریکہ میں مقیم پاکستانیوں سمیت ، متحدہ عرب امارات اور کے کراچی سے بھی ایک شہری شامل ہیں، دورے میں شامل سرکردہ پاکستانیوں میں پاکستان کرکٹ بورڈ کے سابق چیئر مین نسیم اشرف ,اور ان کی اہلیہ سمیت ، نجی ٹی وی جیو نیوز کے دبئی سے منسلک سبط عارف شامل ہیں ،

جبکہ سندھی نجی ٹیلی وژن آواز ٹی وی کے ، سی سی اور ، امتیاز میر بھی، دورے میں شامل ہیں دیگر افراد میی زیادہ تر امریکہ اور دبئی میں مقیم ہیں ،مجموعی طور پر دورے میں 7 پاکستانی مرد اور 2 خواتین شامل ہیں۔

شراکاہ جو کہ ایک غیر سرکاری تنظیم ہے اس نے جمعہ کے روز اپنے ٹوئیٹر اکاؤنٹ پر ایک تصویر شئیر کرتے ہوئے لکھا ہے کہ

“پاکستانی اور پاکستانی نژاد امریکی صحافیوں، مذہبی اور سماجی رہنماؤں کے ہمارے امن وفد کا اسرائیلی صدر مملکت نے پرتپاک استقبال کیا۔
اسرائیلی صدر اسحاق ہرزوگ – ایک حقیقی رہنما ہیں جو اسرائیل اور اس کے قریبی اور دور کے پڑوسیوں کے درمیان گرم جوشی پر مبنی امن کے تصور کو قائم کرتے ہیں۔

واضح رہے اس سے قبل مئی کے دوسرے ہفتے میں بھی اسی غیر سرکاری تنظیم شراکاہ ایک پاکستانی وفد کو دورہ اسرائیل پر لے گئی تھی ،جہاں اس دورے میں پاکستانی سرکاری ٹی وی سے منسلک صحافی احمد قریشی بھی موجود تھے، اس دورے پر عوامی رد عمل آنے کے بعد حکومت پاکستان نے انہیں سرکاری ٹی وی سے برطرف کر دیا تھا

واضح رہے پاکستان کے دفتر خارجہ نے جمعرات کے روز اپنے ایک بیان میں اس حالیہ پاکستانی وفد کے دورہ اسرائیل کی تردید کی ہے اور بتایا ہے کہ دورے کو منعقد کروانے والی تنظیم غیر ملکی اور دورے میں شامل افراد پاکستان نہیں بلکہ باہر کے ممالک کے شہری ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں