بابراعظم نے ٹیم میں بہتری سے متعلق ہاتھ کھڑے کر دیے

قومی کپتان بابر اعظم کا کہنا ہے کہ ایک دم سے تمام چیزیں بہتر نہیں ہوسکتیں اس میں وقت لگتا ہے۔پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی ) پوڈکاسٹ کی 41 ویں قسط جاری کی گئی ہے، پوڈ کاسٹ میں 17سال بعد ہونے والی سیریز کے حوالے سے کپتان بابر اعظم اور انگلینڈ کے کپتان جوز بٹلر کے بیانات شامل ہیں۔

پوڈ کاسٹ میں انگلینڈ کے خلاف سیریز کے حوالے سے دیے گئے بیان میں قومی کپتان بابر اعظم نے کہا کہ انگلینڈ کے خلاف سیریز بہت اچھی رہی، انگلینڈ ٹیم بھی ٹی ٹوئنٹی میچز میں بہت ٹف ٹائم دیتی ہے، میچز بہت ٹف ہوئے اور انہی مشکل میچز کی وجہ سے میگا ایونٹ کی بھرپور تیار ہوئی۔

بابراعظم کا کہنا تھا کہ سیریز کے میچز آخری گیند تک گئے ہیں،کلوز میچ سے کھلاڑیوں کو اعتماد ملتا ہے اور اس سیریز سے ورلڈ کپ کی بہترین تیاری کا موقع ملا۔انہوں نے کہا کہ سیریز میں مختلف کمبی نیشن آزمائے تاکہ پلیئنگ الیون اور پنچ اسٹرنتھ کا اندازہ لگایا جاسکے، دن بدن ٹیم میں بہتری آتی جارہی ہے، بولنگ پہلے بھی بہترتھی مزید بہتر ہوتی جارہی ہے۔

کپتان نے اپنی گفتگو میں کھلاڑیوں کو پیغام دیا کہ کھلاڑیوں کو ایک میسیج دیتا ہوں کہ اپنا100فیصد دیں، نتیجہ ہمارے ہاتھ میں نہیں لیکن کھلاڑی 100فیصد دے رہے ہیں، ٹیم میں شامل ہر کھلاڑی مین آف دی میچ بننا چاہتا ہے جو کہ بحیثیت کپتان میرے لیے بہت اچھا ہے۔

دوسری جانب انگلش کپتان جوز بٹلر کا کہنا تھا کہ انگلینڈ ٹیم 17 سال بعد پاکستان آئی، سیریز تین تین سے پہلے برابر ہوئی اور فائنل میچ میں کامیابی ملی، سیریز کے میچز بہت اچھے رہے۔جوز بٹلر نے بھی کراچی کے کھانوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ کراچی میں اسپیشلی کھانوں سے بہت لطف اندوز ہوئے ، پاکستان کے دورے پر ہم نے بہت انجوائے کیا اور اس دوران شائقین نے بہت سپورٹ کیا۔انگلش کپتان کا کہنا تھا کہ ورلڈکپ سے پہلے بہترین ٹیم سے سیریز کھیلی، ہماری میزبانی بہت شاندار تھی جب کہ پاکستان ٹیم بہترین کھلاڑیوں پر مشتمل ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں