68 سالہ خاتون 1400بچوں کی پرورش کیسے کرتی ہے ؟آپ بھی جانئیے

نئی دہلی(ویب ڈیسک) بھارت کی رہائشی خاتون گزشتہ 40 برس سے لاوارث بچوں کی کفالت کر رہی ہیں اور ان بچوں کی تعداد بڑھتے بڑھتے 1400 سے تجاوز کر چکی ہے۔

68 سالہ سندھوتائی سپکل نہ صرف ان بے سہارا بچوں کو خوراک، لباس اور رہائش فراہم کر رہی ہیں بلکہ انہیں ماں کا پیار دینے کی بھی کوشش کرتی ہیں۔ ان خدمات کے صلے میں وہ دنیا بھر میں مقبول ہیں بلکہ اب تک 750 سے زائد ایوارڈ بھی حاصل کر چکی ہیں اور اسی مناسب سے انہیں ’’یتیموں کی ماں‘‘‘ کا نام دیا گیا ہے۔

سپکل چار یتیم خانوں کی مالک ہیں جن میں 2 بچوں اور 2 لڑکیوں کے لیے مخصوص ہیں۔ یہ سب انہوں نے اپنی حقیقی بیٹی اور ایک یتیم بچے کی مدد سے قائم کیے جب کہ اب تک ان کے بچے ڈاکٹر، انجینیئر اور پروفیسر بن کر اہم عہدوں پر فائز ہو چکے ہیں۔ سپکل کے مطابق یہ بچے انہوں نے کوڑے کے ڈھیر، ریلوے پٹڑیوں اور آوارہ کتوں کے منہ سے چھڑا کر حاصل کیے ہیں جنہیں وہ کسی بھی بے اولاد جوڑے کو نہیں دیتیں اور 18 سال تک ان کی تربیت کرتی ہیں۔ ان کی پوری کوشش ہوتی ہے کہ وہ بچوں کو تلخ حالات سے مقابلے کے لیے تیار کریں اور اس کی تربیت بھی فراہم کرتی ہیں۔

ابتدا میں وہ اس کام کے لیے گاؤں گاؤں گھوم کر لوگوں سے رقم جمع کرتی اور یتیم بچوں کی کفالت کرتی رہی ہیں۔ انہوں نے بچوں کو تعلیم دلائی اور انہیں درست راہ پر گامزن کرنے کی بھرپور کوشش کی جنہیں وہ اپنی سگی اولاد کی طرح سمجھتی ہیں۔
Like 0 Dislike 0