mumtaz shameem

ممتازشمیم کی خدمات پرانکی رحلت صحافیوں نےیادگاربنادی

اسلام آباد(سٹیٹ ویوز ) آزاد کشمیر کی صحافتی سیاست کے با با کہلانے والے ممتاز شمیم چوہدری انتقال کر گئے۔ممتاز شمیم چوہدری آزاد کشمیر سنٹرل یونین آف جرنلسٹس کے بانی صدر اور کشمیر جرنلسٹس فورم کے سنیئرممبر تھے۔مرحوم 25سال سے زائد عرصہ تک پاکستان کے سب سے بڑے روزنامہ جنگ کے ساتھ وابستہ رہے۔

علاوہ ازیں روزنامہ نیوز مارٹ میں بطور ایدیٹر بھی خدمات سر انجام دیں۔آزاد کشمیر و پاکستان کی صحافتی سیاست میں نمایاں خدمات وجہ شہرت تھی۔مرحوم عارضہ قلب میں مبتلا تھے۔گزشتہ روز اچانک تکلیف کے باعث راولپنڈی کارڈیالوجی سنٹر لے جایا گیا جہاں ڈاکٹروں کی کوششیں جانبر ثابت نہ ہو سکیں اور ممتاز شمیم چوہدری خالق حقیقی سے جا ملے۔

ممتاز شمیم چوہدری کے انتقال کی خبر میڈیا و سوشل میڈیا میں جنگل کی آگ کی طرح پھیلی اور تھوڑی ہی دیر میں راولپنڈی اسلام آباد سے صحافیوںاور ممتاز شمیم کے عزیز و اقارب کی بڑی تعداد انکے گھر پہنچ گئی۔ممتاز شمیم چوہدری کی نماز جنازہ راولپنڈی پریس کلب لیاقت باغ میں سہہ پہر 3بجے ادا کی گئی۔نماز جنازہ ممتاز عالم دین و ممبر قانون ساز اسمبلی آزاد کشمیر پیر علی رضا بخاری نے پڑھائی۔

نماز جنازہ سے قبل راولپنڈی پریس کلب میںکشمیر جرنلسٹس فورم کے زیر اہتمام مرحوم کی صحافتی خدمات کو خراج تحسین پیش کرنے کیلئے تعزیتی ریفرنس کا انعقاد کیا گیا۔جس سے آزاد کشمیر کے سابق صدر و وزیر اعظم سردار یعقوب خان،ممبر اسمبلی پیر علی رضا بخاری، پی ایف یو جے کے صدر افضل بٹ،حاجی نواز رضا،پرویز شوکت،عابد خورشید، اخبار فروش یونین کے سیکرٹری ٹکا خان،امجد چوہدری، زاہد تبسم،عامر محبوب،بشیر عثمانی و دیگر نے خطاب کیا۔

اسٹیج سیکرٹری کے فرائض فورم کے سیکرٹری زاہد عباسی نے سر انجام دیے، مقررین نے مرحوم ممتاز شمیم چوہدری کی صحافتی خدمات کو زبر دست الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا۔تعزیتی ریفرینس سے خطاب کرتے ہوئے سابق صدر حاجی یعقوب خان نے کہا کہ ممتاز شمیم نے اپنی زندگی صحافت اور صحافی کارکنوں کیلئے وقف کی جس پر انھیں جتنا بھی خراج تحسین پیش کیا جائے کم ہے۔انھوں نے کہا کہ ضرورت اس امر کی ہے کہ ممتاز شمیم کے ادھورے مشن کی تکمیل کیلئے آگے بڑھ کر کام کیا جائے۔ممبر اسمبلی پیر علی رضا بخاری نے کہا کہ ممتاز شمیم چوہدری سے میرا دیرینہ تعلق رہا جس میں ہمیشہ انھیں شفیق پایا۔وہ مثبت صحافت کے قائل تھے جو انکا بڑا کارنامہ ہے۔صدر پی ایف یو جے افضل بٹ نے کہا کہ ممتاز شمیم کی اچانک وفات نے تمام صحافی برادری کو ہلا کر رکھ دیا ہے ہم نہ صرف ممتاز شمیم کے ادھورے مشن کو آگے بڑھائیں گے بلکہ تمام سحافی برادری ملکر ممتاز شمیم کے بچوں کی کفالت کا انتظام بھی کریگی۔

صدر کشمیر جرنلسٹس فورم عابد خورشید نے کہا کہ ممتاز شمیم کی اچانک موت ہمیں یہ سبق دیتی ہے کہ تمام صحافی برادری اپنے اختلاف ختم کرکے ایک ہو جائے۔ممتاز شمیم کشمیر کا قیمتی اثاثہ تھے اور ہم انکا مشن جاری رکھیں گے۔تقریب سے پریس فائونڈیشن کے وائس چیئرمین امجد چوہدری، اے کے این ایس کے صدر زاہد تبسم، بشیر عثمانی،پرویز شوکت،نواز رضا اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔

بعد ازاں نماز جنازہ میں جملہ سیاسی و صحافتی قائدین کے علاوہ جموں کشمیر پی پی کے صدر وممبر قانون ساز اسمبلی سردار خالد ابراہیم،جماعت اسلامی کے عطا الرحمن چوہان، سابق مشیر اختر حسین گل پیڑا، ن لیگ کے چوہدری عظیم بخش،چوہدری کالا خان،مرتضی درانی و دیگر شریک ہوئے۔نماز جنازہ میں سنیئر صحافی حضرات سی آر شمسی،پریس کلب کے سیکرٹری عمران ڈھیلو،اعجاز عباسی،راجہ کفیل،سلطان سکندر، وقار ستی،سردار عاشق،خاور نواز راجہ،شہزاد راٹھور، سید خالد گردیزی ،راجہ شفیق سمیت صحافیوں و سیاسی جماعتوں کے کارکنون کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

ممتاز شمیم چوہدری کی نماز جنازہ بعد از نماز مغرب کوٹلی ادا کی گئی اور آج دن انھیں اپنے آبائی گائوں کوٹلی نکیال میں سپرد خاک کیا جائے گا۔دریں اثنا وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان، سنیئر وزیر چوہدری طارق فاروق، وزیر تعمیرات عامہ چوہدری عزیز ، جماعت اسلامی کے امیر و ممبر اسمبلی عبدالرشید ترابی نے ممتاز شمیم چوہدری کی وفات پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔