huts

بے رنگ جھونپڑ پٹی قوسِ قزح کے رنگوں میں ڈھل گئی

جکارتہ(سٹیٹ ویوز) انڈونیشیا میں غریبوں کی ایک بستی کے مکانات پر خوبصورت رنگ و روغن کرکے انہیں ایک نیا روپ دیدیا گیا ہے اور اب لوگ یہاں بڑی تعداد میں آرہے ہیں جب کہ اس سے قبل کوئی اس بوسیدہ علاقے میں قدم رکھنا بھی پسند نہیں کرتا تھا۔

انڈونیشیا میں واقع اس دیہات کا نام ’’کامپنگ پیلانگی‘‘ ہے جو اب دھنک کے رنگوں سے روشن ہے۔ چند ماہ قبل یہاں بے رنگ اور بھدی جھونپڑیاں تھیں جو غربت اور پسماندگی کی شکل پیش کررہی تھیں لیکن اب اس ٹوٹی پھوٹی بستی پر 22 ہزار ڈالر سے زائد کی رقم خرچ کی گئی جس سے اس کا نقشہ ہی بدل چکا ہے۔

اس کام کا آغاز ایک اسکول پرنسپل نے کیا تھا جس کے بعد تین مزید کچی بستیوں کے لوگوں نے اپنی مدد آپ کے تحت اپنے گھروں کو نیا رنگ اور روپ دیا، حکومت نے اس استاد کے جذبے کو دیکھتے ہوئے 23 لاکھ روپے کی رقم کے بدلے سینکڑوں گھروں کو خوشنما بنادیا جس سے یہ محلہ سیاحتی علاقہ بن چکا ہے۔ کامپنگ کا گاؤں مکمل طور پر آرٹ کا ایک نمونہ بن چکا ہے اور زیر نظر تصاویر سے زندگی پھوٹتی محسوس ہوتی ہے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ رنگ ہونے کے بعد یہاں کاروبار میں اضافہ ہوا ہے اور یہاں لوگوں کی آمدنی بھی بڑھی ہے۔