کشمیرکا معاملہ دوطرفہ ہی سلجھایاجاسکتا ہے

نئی دہلی(سٹیٹ ویوز) بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج نے کہا ہے کہ کشمیرپرہم بھی اس معاہدوں سے بندھے ہیں جس سے پاکستان بندھا ہوا ہے، کشمیرکا معاملہ دوطرفہ ہی سلجھایاجاسکتا ہے،کشمیر کا مسئلہ پاک بھارت مل کر حل کریں گے.

پاکستان اوربھارت کے درمیان بات چیت میں تیسرا فریق قبول نہیں۔ پاکستان کے ساتھ تمام معاملات بات چیت سے حل کرنا چاہتے ہیں۔ شنگھائی تعاون تنظیم کے اجلاس میں وزیر اعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف اور بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کی ملاقات کے کوئی امکانات نہیں ہیں اور نہ ہی آستانہ میں مودی اورنوازشریف کی کوئی ملاقات پہلے سے طے ہوئی ہے۔

بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج نے کہا ہے کہ پاکستان کے ساتھ تمام معاملات مذاکرات کے ذریعے حل کرنا چاہتے ہیں ۔پاکستان سے تعلقات میں اتارچڑھاؤ رہا ہے،لیکن بات چیت کے لئے تیارہیں۔ لیکن دہشت گردی اوربات چیت ایک ساتھ نہیں چل سکتی۔ پٹھان کوٹ واقعہ،پاکستان نے جے آئی ٹی بھیجی،ہم نے تعاون کیا۔ حیدرآباد فنڈزکیس کا معاملہ پاکستان،بھارت کے درمیان عدالت میں چل رہا ہے جبکہ پاکستان کے ساتھ ہمارے کئی معاملات عدالتوں میں چل رہے ہیں۔ کشمیرمعاملے پرشملہ معاہدہ،لاہورڈکلیئریشن ہے کہ مسئلہ کشمیردوطرفہ معاملہ ہے۔ معاہدوں کے تحت کشمیرکا معاملہ پاکستان اوربھارت مل کرنمٹائیں گے۔ ہم آئی سی جے میں کشمیرکے لیے نہیں گئے اور نہ پاکستان کشمیرکے معاملے پرعالمی عدالت میں جا سکتا ہے۔