عقیدہ ختم نبوت کے حوالے سے پیر علی رضا بخاری نے کا اہم پیغام دے دیا

‌لیوٹن ( سٹیٹ ویوز ) مسلم لیگ ن آزاد کشمیر کے راہنما حسین سرور شہید کی طرف سے ممبرازاد جموں کشمیر قانون ساز اسمبلی و سجادہ نشین دربار عالیہ بساہاں شریف پیر علی رضا بخاری کے اعزاز میں استقبالیہ دیا.

اس موقع پر ممبر برطانوی پارلیمنٹ لارڈ قربان حسین ، میئر لیوٹن محمد ایوب ، سابق میئر راجہ وحید سابق مئیر ریاض بٹ ،پروفیسر مسعود اختر اور کشمیری کمیونٹی کے دیگر لوگوں بھی استقبالیہ میں شریک ہوئے۔ استقبالیہ سے خطاب کرتے ہوئے پیر سید علی رضا بخاری نے کہا کہ عقید ہ ختم نبوت امت مسلمہ کے رگ وخون میں شامل ہوچکا ہے۔ یہ ان کے ایمان کا حصہ ہے۔

اس کو کوئی ان کے دل ودماغ سے نہیں نکال سکتا ہے۔ اس لئے اس عقیدہ کے بارے میں امت کو آگاہ کرنا اور نئی نسل تک اس عقیدے کو پہنچانا اپنا دینی فریضہ سمجھتے ہیں۔ عقیدہ ختم نبوت کا تحفظ ہمارے ایمان اور محبت رسول کا مسئلہ ہے۔ اس سے دستبرداری کو آخرت کی تباہی سمجھتے ہیں۔ حسین سرور نے کہا کہ اس ملک میں جہاں ہماری اولادیں دین سے دور ہوتی جارہی ہیں وہاں اپنی اولادوں کو اسلام کے بنیادی عقائد کی طرف لانا اور اس پر قائم رکھنا یہ علماء اور مسلمانوں کی ذمہ داری ہے۔

ہر سال علماء کے توحید وسنت اورختم نبوت کانفرنسوں کے انعقاد کا بنیادی مقصد یہی ہے کہ مسلمان اسلام کے بنیادی عقائد سے واقف ہوکر اپنی اولادوں کو گمراہ اورباطل نظریات سے بچا سکیں۔ انہوں نے کہا کہ ختم نبوت کا عقیدہ مسلمانوں کے بنیادی عقائد میں سے ہے کہ حضرت محمد ﷺاللہ کے آخری رسول ہیں قیامت تک کوئی نیا نبی اور رسول نہیں آسکتا۔ جو لوگ نبی اکرم ﷺ کے بعد کسی قسم کی نبوت کو تسلیم کرتے ہیں ان کا اسلام اور مسلمانوں کے ساتھ کوئی تعلق نہیں